NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Roke faramte thay

Nohakhan: Azadari Murshidabad


roke farmate thay har bibi se sarwar alwida
ay meri bali sakina meri dukhtar alwida

dekhlo jee bhar ke mujhko hai shahadat an qareeb
ab gala mera hai aur khaatil ka khanjar alwida
roke farmate thay...

raat bhar ka ay behan dunya may mai mehman hoo
subha hote qatl hoonga mai muqarrar alwida
roke farmate thay...

sabr karna ay behan hargiz na karna bad-dua
cheen lenge gar udoo balwe may chadar alwida
roke farmate thay...

sab haram ko aur bachon ko tumhe saumpa behan
aur tumhe saumpa khuda ko binte hyder alwida
roke farmate thay...

baad mere ahle keen qaima jala kar lootenge
aur phirayenge tumhe dar dar khule sar alwida
roke farmate thay...

aan kar sunle wasiyat karle ab ruqsat hame
hai kahan ghash may pada sajjad e muztar alwida
roke farmate thay...

روکے فرماتے تھے ہر بی بی سے سرور الوداع
اے میری بالی سکینہ میری دختر الوداع

دیکھلو جی بھر کے مجھکو ہے شہادت عن قریب
اب گلا میرا ہے اور قاتل کا خنجر الوداع
روکے فرماتے تھے۔۔۔

رات بھر کا اے بہن دنیا میں میں مہمان ہوں
صبح ہوتے قتل ہونگا میں مقرر الوداع
روکے فرماتے تھے۔۔۔

صبر کرنا اے بہن ہر گز نہ کرنا بد دعا
چھین لیں گے گر عدو بلوے میں چادر الوداع
روکے فرماتے تھے۔۔۔

سب حرم کو اور بچوں کو تمہیں سونپا بہن
اور تمہیں سونپا خدا کو بنت حیدر الوداع
روکے فرماتے تھے۔۔۔

بعد میرے اہل کیں خیمہ جلا کر لوٹیں گے
اور پھرایںنگے تمہیں در در کھلے سر الوداع
روکے فرماتے تھے۔۔۔

آن کر سن لے وصیت کرلے اب رخصت ہمیں
ہے کہاں سجاد غش میں پڑا سجاد مضطر الوداع
روکے فرماتے تھے۔۔۔