NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Hamay ye hukme

Nohakhan: Tableegh e Imamia
Shayar: Urooj Bijnori


hamay ye hukme aqeedat bahot hai kya kam hai
agar hussain nahi hai hussain ka gham hai

utha hi tha sare baatil ke di sada haq ne
abhi jahan may salamat hussain ka dam hai
hamay ye hukme aqeedat…

unhe uthao jo parde pade hai aankhon par
ye keh rahe ho charaghon may roshni kam hai
hamay ye hukme aqeedat…

tamam umr tadapne ke baad samjha hoo
hayaat kya hai musalsal hussain ka gham ka
hamay ye hukme aqeedat…

jinhe masayab e aale rasool yaad nahi
rasool ko bhi wo bhoolenge jab ye aalam hai
hamay ye hukme aqeedat…

kisi ki laash ko shabbir laaye hai shayad
ke qaimagah may awaaze al atash kam hai
hamay ye hukme aqeedat…

udao khaak ke shabbir hogaye hai shaheed
urooj jin o malak may shor e matam hai
hamay ye hukme aqeedat…

ہمیں یہ حُکمِ عقیدت بہت ہے کیا کم ہے
اگر حُسین نہیں ہے حُسین کا غم ہے

اُٹھا ہی تھا سرِ باطل کہ دی صدا حق نے
ابھی جہاں میں سلامت حُسین کا دم ہے
ہمیں یہ حُکمِ عقیدت۔۔۔

اُنہیں اُٹھائو جو پردے پڑے ہیں آنکھوں پر
یہ کہہ رہے ہو چراغوں میں روشنی کم ہے
ہمیں یہ حُکمِ عقیدت۔۔۔

تمام عمر تڑپنے کے بعدسمجھا ہوں
حیات کیا ہے مسلسل حُسین کا غم ہے
ہمیں یہ حُکمِ عقیدت۔۔۔

جنہیں مصائب ِ آلِ رسول یاد نہیں
رسول کو بھی وہ بھولیں گے جب یہ عالم ہے
ہمیں یہ حُکمِ عقیدت۔۔۔

کسی کی لاش کو شبیر لائے ہیں شاید
کہ خیمہ گاہ میں آوازِ العتش کم ہے
ہمیں یہ حُکمِ عقیدت۔۔۔

اُڑائو خاک کہ شبیر ہو گئے ہیں شہید
عروج جن و ملک میں شورِ ماتم ہے
ہمیں یہ حُکمِ عقیدت۔۔۔