NohayOnline

Providing writeups (english & urdu) of urdu nohay, new & old


Kehte thay abide bemaar

Nohakhan: Irfan Hussain
Shayar: Shaukath


hoo mai aafat may giraftaar mujhe rone do
kehte thay abide bemaar mujhe rone do

kaun baaqi hai jo aakar mere aansu poche
bekasi kehti hai har baar mujhe rone do
kehte thay abide bemaar...

ek jiska koi marta hai to rota hai wo shaks
lutgaya sab mera gha rbaar mujhe rone do
kehte thay abide bemaar...

jinko taqdeer hasaati hai wo haste bhi hai
mujhko rona hai sada baar mujhe rone do
kehte thay abide bemaar...

koi baaqi nahi shabbir ka rone waala
hoo mai bekas ka azadar mujhe rone do
kehte thay abide bemaar...

shaah e deen chod gaye hai mujhe rone ke liye
koi baaqi nahi ghamkhaar mujhe rone do
kehte thay abide bemaar...

zabt karta hoo to shaukat mera dil ketha hai
hoo bahattar ka azadar mujhe rone do
kehte thay abide bemaar...

ہوں میں آفت میں گرفتار مجھے رونے دو
کہتے تھے عابد بیمار مجھے رونے دو

کون باقی ہے جو آکر میرے آنسوں پونچھے
بے کسی کہتی ہے ہر بار مجھے رونے دو
کہتے تھے عابد بیمار۔۔۔

ایک جس کا کوئی مرتا ہے تو روتا ہے وہ شخص
لٹ گیا سب میرا گھر بار مجھے رونے دو
کہتے تھے عابد بیمار۔۔۔

جن کو تقدیر ہنساتی ہے وہ ہنستے بھی ہیں
مجھکو رونا ہے سزاوار مجھے رونے دو
کہتے تھے عابد بیمار۔۔۔

کوئی باقی نہیں شبیر کا رونے والا
ہوں میں بے کس کا عزادار مجھے رونے دو
کہتے تھے عابد بیمار۔۔۔

شاہ دیں چھوڑ گےء ہیں مجھے رونے کے لئے
کوئی باقی نہیں غم خوار مجھے رونے دو
کہتے تھے عابد بیمار۔۔۔

ضبط کرتا ہوں تو شوکت میرا دل کہتا ہے
ہوں بہتر کا عزادار مجھے رونے دو
کہتے تھے عابد بیمار۔۔۔