زنداںکا اندھیرا مجھے سونے نہیں دیتا
روتی ہوں تو ظالم مجھے رونے نہیں دیتا

بابا میرے کانوں سے کہو اب بھی ہے جاری
مارے ہیں تماچے بھی سکینہ کو تمھاری
پہلو میں پھپھی کے مجھے رہنے نہیں دیتا
زنداںکا اندھیرا مجھے۔۔۔۔

اول تو مجھے نیند ہی آتی نہیں بابا
سوتی ہوں تو دُروں سے جگا دیتے ہیں اعدا
یہ شمر مجھے سانس بھی لینے نہیں دیتا
زنداںکا اندھیرا مجھے۔۔۔۔

اب خواب میںپانی کی تمنا نہیں کرتی
کانٹے ہیں پڑے حلق میںاور سانس ہے رُکتی
عموں سے شکایت کوئی کرنے نہیں دیتا
زنداںکا اندھیرا مجھے۔۔۔۔

اس قید سے کب ہو گی رہائی میرے بابا
کیسے سہئوں اصغر کی جدائی میرے بابا
غم کنبے کا اب تو مجھے جینے نہیںدیتا
زنداںکا اندھیرا مجھے۔۔۔۔

ریحان بُکا کرتی تھی جب بالی سکینہ
خود موت کے ماتھے پہ بھی آتا تھا پسینہ
یہ واقعہ آنسو میرے رُکنے نہیںدیتا
زنداںکا اندھیرا مجھے۔۔۔۔


zindaan ka andhera mujhe sonay nahi deta
roti hu to mujhe zaalim ronay nahi deta

baba mere kaano se lahoo ab bhi hai jaari
maare hai tamaache bhi sakina ko tumhari
pehlu may phuphi ke mujhe rehne nahi deta
zindaan ka andhera mujhe....

awwal to mujhe neendh aati hi nahi baba
soti hu to durro se jaga dete hai aada
ye shimr mujhe saans bhi lene nahi deta
zindaan ka andhera mujhe....

ab khaab may pani ki tamanna nahi karti
kaante hai pade halq may aur saas hai rukhti
ammu se shikayat koi karne nahi deta
zindaan ka andhera mujhe....

is khaid se kab hogi rihaayi mere baba
kaise sahu asghar ki judaai mere baba
gham kunbe ka ab to mujhe jeene nahi deta
zindaan ka andhera mujhe....

rehaan buka karti thi jab baali sakina
khud maut ke maathe pe bhi aata tha pasina
ye waaqaya aansu mere rukne nahi deta
zindaan ka andhera mujhe....
Noha - Zindan Ka Andhera
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Hasan Sadiq
Download Mp3
Listen Online