یہ مجلسِ شبیر ہے جنت سے حسیں ہے
جو اشک میں لذت ہے وہ کوثر میں نہیں ہے

ہے اشک فشاں مجلسِ شبیر پہ زہرا
حیدر بھی سرِ فرشِ عزا کرتے ہیں گریہ
پڑھتے ہیں محمد بھی غمِ شاہ میں نوحہ
اس مجلسِ سرور میں ہر اک عرش نشیں ہے
یہ مجلسِ ۔۔۔۔۔

چھڑ جاتا ہے ذکرِ شاہِ مظلوم جہاںپر
جنت کو چھوڑ کر ملک آتے ہیں وہاں پر
اللہ کی رحمت بھی برستی ہے مکاں پر
یوں لگتا ہے یہ گھر نہیں فردوسِ بریں ہے
یہ مجلسِ ۔۔۔۔۔

کرتا ہے درِ شاہ پہ ہر شخص کا داماں
بٹتی ہے تبرک میں یہاں نعمتِ ایماں
چکھتے ہی جسے ہوتا ہے اللہ کا عرفاں
ایسی تو کسی رزق میں تاثیر نہیں ہے
یہ مجلسِ ۔۔۔۔۔

خوشبخت ہے وہ جو غمِ سرور سے جُڑا ہے
ہر ایک کی فطرت میں کہاں عشق و وفا ہے
شعلوں کا سفر اُس کے مقدر میں لکھا ہے
جو پرچمِ عباس کے سائے میں نہیں ہے
یہ مجلسِ ۔۔۔۔۔

محسن کے لبوں پر ہیں جو احمد تیرے اشعار
سُنتے ہیں عقیدے سے شاہِ دیں کے عزادار
سُن کر یہی کہتا ہے ہر اک صاحبِ کردار
ہے مجلسِ سرور جہاں ایمان وہیں ہے
یہ مجلسِ ۔۔۔۔۔


yeh majlise shabbir hai jannat se haseen hai
jo ashq may lazzat hai wo kausar may nahi hai

hai ashq fishaan majlise shabbir pe zahra
haider bhi sare farshe aza karte hai giriya
padte hai mohammad bhi ghame shaah may nouha
is majlise sarwar may har ek arsh nasheen hai
yeh majlise ...........

chid jaata hai zikre shahe mazloom jahan par
jannat ko chod kar malak aate hai wahan par
allah ki rehmat bhi barasti hai makaan par
yun lagta hai ye ghar nahi fidous-e-bareen hai
yeh majlise ...........

karta hai dare shah pe har shaks ka damaan
bat-ti hai tabaruk may yahan naymate imaan
chakte hi jise hota hai allah ka irfaan
aisi to kisi riskh may taseer nahi hai
yeh majlise ...........

khushbaqt hai wo jo ghame sarwar se juda hai
har ek ki fitrat may kahaan ishq-o-wafa hai
sholon ka safar uske muqaddar may likha hai
jo parchame abbas ke saaye may nahi hai
yeh majlise ...........

mohsin ke labon par hai jo ahmed tere ashyaar
sunte hai aqeede se shahedeen ke azadaar
sunkar yahi kehta hai har ek saahibe kirdaar
hai majlise sarwar jahan emaan wahi hai
yeh majlise ...........
Noha - Ye Majlise Shabbir
Shayar: Zulfiqar Ahmed
Nohaqan: Mir Mohsin Ali
Download Mp3
Listen Online