یہ مادرِ اصغر نے کہا خاک اُڑا کر
اصغر تجھے ڈھونڈوں میں کہاں دشت میں جا کر

ہے زخم گلے میں بھلا نیند آئے گی کیسے
آ جائو سُلا دوں تمہیں سینے سے لگا کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔

سناٹا ہے مقتل میں اندھیرا بھی بہت ہے
ایسے میں ننھی جاں کہاں رہ گئی جا کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔

کیوں آتے نہیں لال میرے گود میں میری
کیا ملتا ہے اس درد کی ماری کو رُلا کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔

پانی تو نہیں اشکوں سے منہ صاف کروں گی
اس چاند سے چہرے پہ لگی خاک ہٹا کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔

پوشاک بدلوائوں گی سلجھائوں گی زُلفیں
ارمان سے دیکھوں گی تمہیں دولہا بنا کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔

تم رہ گئے مقتل میں خیال آیا نہ تم کو
ماں کس کو سلائے گی کلیجے سے لگا کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔

بے مکھنا و چادر ہوں حیا آتی ہے ورنہ
میں خود ہی تمہیں ڈھونڈتی میدان میں آ کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔

الفاظ یہ نوحے کے نہیں لکھے ہیں گوہر
لایا ہوں جگر پاروں کو کاغذ پہ سجا کر
یہ مادرِ اصغر ۔۔۔۔۔



ye madare asghar ne kaha khaak udakar
asghar tujhe dhoondoo mai kahan dasht may jaakar

hai zakhm galay may bhala neendh aayegi kaise
aajao sulaadoo tumhein seene se lagakar
ye madare asghar....

sannata hai maqtal may andhera bhi bahot hai
aise may nanhi jaan kahan rehgaye jaakar
ye madare asghar....

kyun aate nahi laal mere godh may mere
kya milta hai is dard ki maari ko rulaakar
ye madare asghar....

pani to nahi ashkon se moo saaf karungi
is chand se chehre pe lagi khaak hata kar
ye madare asghar....

poshak badalwaungi suljhaungi zulfein
armaan se dekhungi tumhein dulha banakar
ye madare asghar....

tum reh gaye maqtal may khayaal aaya na tumko
maa kisko sulayegi kaleje se lagakar
ye madare asghar....

be-maqna o chadar hoo haya aati hai warna
mai khud hi tumhein dhoondti maidan may aakar
ye madare asghar....

alfaaz ye nohay ke nahi likhe hai gohar
laaya hoo jigar paaron ko kaagaz pe sajakar
ye madare asghar....
Noha - Ye Madare Asghar
Shayar: Gohar
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online