یہ غمِ شبیر ہے دُنیا کو بتاتے چلو

اس غمِ شبیر کو کیسے بھُلائیں گے ہم
حشر تک اہلِ جہاں اس کو سُنائیں گے ہم
داغ جو ماتم کے ہیں سب کو دیکھائیں گے ہم
کر کے بیاں ذکرِ غم سب کو رُلاتے چلو
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

اشکِ اعزا ئے حسین حشر میں کام آئیں گے
سامنے زہرا کے ہم روتے ہوئے جائیں گے
شافعِ محشر سے ہم اس کا اجر پائیں گے
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

اہلِ اعزا آپ کو دیتی ہے زہرادُعا
ان کوتُوں آباد رکھ پالنے والے خدا
یہ میرے فرزند پر روتے رہیں گے صدا
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

کتنا آلمناک ہے معرکئہ کر بلا
اس کا ہر اک باب ہے خون میں ڈُوبا ہوا
کہتے تھے خود جبرائیل ظلم تھا حد سے سِوا
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

ارض و سما روئے ہیں کُل انبیائ
روتے ہوئے آئے ہیںکربلا میں مصطفیٰ
اس لیے اہلِ اعزا کرتے ہیں آہ و بُکا
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

فاطمہ کے لال پر یوں رِشِ تیغ و تبر
آج تک حیران ہیں قوتِ فکرِ بشر
ہم اُسی مظلوم پرروتے ہیں شام و سحر
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

ثانیئے زہرا کا لال حق پہ فدا ہو گئے
قاسمِ نوشاہ بھی ماں سے جُدا ہو گئے
قتل علمدار بھی اہلِ اعزا ہو گئے
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

کیا سبق آموز ہے سانحہ بے شیر کا
کیا خطا بچے کی تھی کوئی بتا دے ذرا
اصغرِ معصوم کو تیر سے مارا گیا
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

دیکھ کے اکبر کو یہ کہتے تھے ابنِ علی
یہ میرا فرزند ہے ہوبہو شکلِ نبی
ایسے جواں بیٹے کے سینے میں برچھی لگی
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔

صرف بہتر تھے وہ لاکھ تھی فوجِ ستم
کیسے بہتر تھے وہ رکھ لیا حق کا بھرم
مِٹ نہیں سکتا کلیم ایسے بہتر کا غم
کر کے بیاں ذکرِ غم۔۔۔
یہ غمِ شبیر ہے۔۔۔۔۔


ye gham e shabbir hai dunya ko batate chalo

is ghame shabbir ko kaise bhulayenge hum
hashr tak ahle jahan isko sunayenge hum
daagh jo matam hai sab ko dikhayenge hum
karke bayan zikre gham sab ko rulaate chalo
ye gham e shabbir hai....

ashke aza e hussain hashr may kaam aayenge
saamne zehra ke hum rote hue jaayenge
shaafaye mehshar se hum iska ajar paayenge
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

ahle aza aap ko deti hai zehra dua
inko to abaad rak paalne wale khuda
ye mere farzand par rote rahenge sada
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

kitna alam naak hai maareka e karbala
iska har ek baab hai khoon may dooba hua
kehte thay khud jibraeeel zulm tha hadh se siwa
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

arz o sama roye hai roye hai kul ambiya
rote hue aaye hai karbala may mustufa
is liye ahle aza karte hai aah o buka
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

fatema ke laal par yun rishe taygh o tabar
aaj tak hairaan hai quwwate fikre bashar
hum usi mazloom par rote hai sham o sehar
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

saaniye zehra ke laal haq pe fida hogaye
qasime naushah bhi maa se juda hogaye
qatl alamdar bhi ahle aza hogaye
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

kya sabakh aamoz hai saaniha baysheer ka
kya khata bache ki thi koi batade zara
asghar e masoom ko teer se maara gaya
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

dekh ke akbar ko ye kehte thay ibne ali
ye mera farzand hai hoo bahoo shakle nabi
aise jawan bete ke seene may barchi lagi
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....

sirf bahattar thay wo laakh thi fauje sitam
kaise bahattar thay wo rakh liye haq ka bharam
mit nahi sakta kaleeem aise bahattar ka gham
karke bayan zikre gham....
ye gham e shabbir hai....
Noha - Ye Ghame Shabbir Hai
Shayar: Kaleem
Nohaqan: Anjuman e Masoomeen
Download Mp3
Listen Online