یا علی ادرکنی  یا علی ادرکنی
شاہ والا کا پدر ہوگیا چھلنی چھلنی
کھینچتے ہیں شاہ دیں سینہ  اکبر سے انی

چور زخموں سے ہے تن اور کمر بھی خم ہے
ضعف کا عالم ہے
وقت نزح ہے جوان بیٹے کا اور بیوطنی
یا علی ادرکنی ...

جلتی ریتی پہ لئے بیٹھے ہیں لاشہ اکبر
مر نہ جائے سرور
داغ فرزند ہے زخمی ہے غریب الوطنی
یا علی ادرکنی ...

رن سے قاسم نہ پکارا تو شاہ دیں نے کہا
خیر ہو بار الھہ
گل نہ ہو جائے جس میں چراغ حسنی
یا علی ادرکنی ...

بال کھولے ہوئے زینب یہ دعا کرتی تھیں
خیر ہو بھائی کی
ذات شبیر سے باقی ہے لقب پنجتنی
یا علی ادرکنی ...

باب ساعت پہ تو آ پوھنچی ہوں در در پھر کر
لیجئے بیٹی کی خبر
جاؤں میں کس طرح دربار میں جاں پر ہے بنی
یا علی ادرکنی ...

کب سے ہے حال پریشاں سوالی در پر
ایک انیس مضطر
بات کچھ اسکے مقدر کی ابھی تک نہ بنی
یا علی ادرکنی ...


ya ali adrikni ya ali adrikni
shahe waala ka pidar hogaya chalni chalni
khainchte hai shahe deen seena e akbar se ani

choor zaqmon se hai tan aur kamar bhi kham hai
zauf ka aalam hai
waqt e nazha hai jaawan bete ka aur bewatani
ya ali adrikni....

jalti reti pe liye baithe hai laashe akbar
marna jaaye sarwar
daaghe farzand hai zaqmi hai gharibul watani
ya ali adrikni....

ran se qasim ne pukara to shahedeen ne kaha
qair ho baare ilah
gul na hojae hawa jis me charaghe hasani
ya ali adrikni....

baal khole hue zainab ye dua karti thi
qair ho bhai ki
zaate shabbir se baakhi hai laqab panjatani
ya ali adrikni....

baabe saa-at pa to aa pahunchi hoo dar dar phir kar
lije beti ki khabar
jaun mai kis tarha darbaar my jaan par hai bani
ya ali adrikni....

kabse hai haal pareshaan sawali darr par
ek aneese muztar
baat kuch uske muqaddar ki abhi tak na bani
ya ali adrikni....
Noha - Ya Ali Adrikni
Shayar: Anees Pehersari
Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online