وقت سجاد نے کیسے وہ گُزارا ہو گا
نام زینب کا جو غیروںنے پُکارا ہو گا

یا رب کوئی مل جائے نہ پہچاننے والا
بازار میں سجاد دُعا مانگ رہا ہے
وقت ۔۔۔۔۔

لو حسین ابنِ علی پیاسے ذبح ہونے لگے
کتنا شرمندہ وہ دریا کا کنارا ہو گا
وقت ۔۔۔۔۔

وہ گِرا زین سے زینب کی ردا کا ضامن
کون اب فاطمہ جائی کا سہارا ہو گا
وقت ۔۔۔۔۔

سرِ میدان تُو جانے تو لگا ہے اصغر
کس طرح تیرے بِنا ماں کا گُزارا ہو گا
وقت ۔۔۔۔۔

نوکِ نیزہ پہ بہنے لگے آنسُو مولا
پھر سکینہ کو کسی شخص نے مارا ہو گا
وقت ۔۔۔۔۔

روزِ محشر کا ہمیں ڈر نہیں کوئی شوکت
ہاتھ شبیر کے قدموں پہ ہمارا ہو گا
وقت ۔۔۔۔۔


waqt sajaad ne kaise wo guzara hoga
naam zainab ka jo ghairon ne pukara hoga

ya rab koi mil jaaye na pehchan-ne wala
bazaar may sajjad dua maang raha hai
waqt...........

lo hussain ibne ali pyase zibha hone lagay
kitna sharminda wo darya ka kinara hoga
waqt.......

wo gira zeen se zainab ki rida ka zaamin
kaun ab fatima jaayi ka sahara hoga
waqt........

saray maidan tu jaane to laga hai asghar
kis tarha tere bina maa ka guzara hoga
waqt..........

noke naiza pe bahane lage aansun maula
phir sakina ko kisi shaks ne maara hoga
waqt.......

roze mehshar ka hame darr nahi koi shoukath
haath shabbir ke khadmon pe hamara hoga
waqt...........
Noha - Waqt Sajjad Ne
Shayar: Shaukath
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online