غازی عباس کو دے کے دیں کا علم
بولے سبطِ نبی میرا اک کام کر
میرے بازو علمدارِ شاہِ وفا
اے غنی و سخی میرا اک کام کر

اے خدائے وفا سیدہ کی دُعا
جُرتوں کے ولی میرا اک کام کر
اے سب کے ولی اے میری زندگی
مثلِ نادِ علی میرا اک کام کر

چاہتا ہے یہ شبیر بھائی میرے
آج سب تیرا جا ہ و حشم دیکھ لے
اس طرح شامیوں سے توں کر گفتگو
لہجہِ حیدری کا بھرم دیکھ لے

اب یہ پردہ اُٹھا ان کو جا کہ بتا
عظمِ شبیر عظمِ حسینی ہے کیا
ہم محافظ ہیں قرآن و اسلام کے
کس لیے آئے ہیں بر سرِ کربلا

بول ایسے کہ خالق کو کہنا پڑے
ذاتِ حیدر کے عکس کیا بات ہے
آج نہجِ بلاغہ کا خالق کہے
واہ میرے لال عباس کیا بات ہے

بات آقا کی غازی نے جس دم سُنی
دفعتاً شیر نے اک انگڑائی لی
شام کی فوجوں میں مچ گئی کھلبلی
لوگ کہنے لگے آ گئے کیا علی
اور روحِ علی مسکرانے لگی
واہ میرے لال ۔۔۔
میرے غازی جری ۔۔۔

بولے عباس یہ لشکرِ شام سے
وہ جو واقف نہیں ہے میرے نام سے
باخبر وہ نہیں اپنے انجام سے
منسلک میں بھی ہوںحکم کے پیغام سے
یوں نوازا مجھے شہہ نے انعام سے
واہ میرے لال ۔۔۔
میرے غازی جری ۔۔۔

میں بتائوں تمہیں کون شبیر ہے
عکس اسلام قرآں کی تفسیر ہے
خُلد باغِ ارم اُسکی جاگیر ہے
اُسکے قدموں تلے حُر کی تقدیر ہے
میرے بارے میں اُس کی یہ تقریر ہے
واہ میرے لال ۔۔۔
میرے غازی جری ۔۔۔

یہ غلامیِ شہہ کا شرف ہے ملا
ملکہِ خُلد نے مجھ کو بیٹا کہا
نام عباس زینب نے میرا رکھا
جھولا شبیر نے ہے جھُلایا میرا
پھر حسن نے گلے سے لگا کر کہا
واہ میرے لال ۔۔۔
میرے غازی جری ۔۔۔

پیاس بچوں کی لائی یہاں تک مجھے
مشک اک بھر کے لے جائوں گا نہر سے
میرے آقا نے روکا لڑائی سے ہے
ورنہ روکے مجھے حوصلہ ہے کسے
میں ہوں بیتاب سُن لو یہی اک صدا
واہ میرے لال ۔۔۔
میرے غازی جری ۔۔۔

جب مکمل ہوا زندگی کا سفر
بولا شبیر سے باوفا نہر پر
اپنے پیروں پہ رکھ لیجیئے میرا سر
خوش ہو اُمُ ا لبنین جب سُنے یہ خبر
میرے بیٹے سے شبیر نے کہہ دیا
واہ میرے لال ۔۔۔
میرے غازی جری ۔۔۔

ہائے ریحان و سرور عجب وقت تھا
ہو کے بے دست جب میرا غازی گِرا
باوفا کا علم خوں میں تر ہو گیا
روحِ زہرا پُکاری سرِ کربلا
توں نے سقائی کا حق ادا کر دیا
واہ میرے لال ۔۔۔
میرے غازی جری ۔۔۔


ghazi abbas ko deke deen ka alam
bole sibte nabi mera ek kaam kar
mere bazu alamdare shaah e wafa
ay ghani o sakhi mera ek kaam kar

ay khuda e wafa sayyeda ki dua
jurraton ke wali mera ek kaam kar
ay sabke wali ay meri zindagi
misle nade ali mera ek kaam kar

chahta hai ye shabbir bhai mere
aaj sab tera jaaho hashm dekhle
is tarah shamiyon se tu kar guftagoo
lehjaye hydery ka bharam dekhle

ab ye parda utha inko jaake bata
azme shabbir azme hussaini hai kya
hum muhafiz hai quran-o-islam ke
kis liye aaye hai bar sare karbala

bol aise ke khaliq ko kehna pade
zaate hyder ke aqqas kya baat hai
aaj nehje balagha ka khaliq kahe
wah mere laal abbas kya baat hai

zaate hyder ke aqqas kya baat hai
mere ghazi jari teri kya baat hai

baat aqa ki ghazi ne jis dam suni
da-fatan sher ne ek angdayi li
shaam ki faujon may mach gayi khalbali
log kehne lage aa gaye kya ali
aur roohe ali muskurane lagi
wah mere laal....
mere ghazi jari....

bole abbas ye lashkare shaam se
wo jo waqif nahi hai mere naam se
ba khabar wo nahi apne anjaam se
munsalik mai bhi hoo khum ke paigham se
yun nawaza mujhe sheh ne inaam se
wah mere laal....
mere ghazi jari....

mai bataun tumhe kaun shabbir hai
aqse islam quran ki tafseer hai
khuld baagh-e-iram uski jageer hai
uske qadmon tale hurr ki taqdeer hai
mere baare may uski ye taqreer hai
wah mere laal....
mere ghazi jari....

ye ghulami e sheh ka sharaf hai mila
malkaye khuld ne mujh ko beta kaha
naam abbas zainab ne mera rakha
jhoola shabbir ne hai jhulaya mera
phir hassan ne gale se laga kar kaha
wah mere laal....
mere ghazi jari....

pyas bachon ki laayi yahan tak mujhe
mashk ek bhar ke le jaaunga nehr se
mere aaqa ne roka ladayi se hai
warna roke mujhe hosla hai kise
mai hoo betaab sunlo yehi ek sada
wah mere laal....
mere ghazi jari....

jab mukammal huwa zindagi ka safar
bola shabbir se bawafa nehr par
apne pairon pe rakh lijiye mera sar
khush ho ummul baneen jab sune ye khabar
mere bete se shabbir ne keh diya
wah mere laal....
mere ghazi jari....

haye rehaan o sarwar ajab waqt tha
hoke be dast jab mera ghazi gira
bawafa ka alam khoon may tar hogaya
rooh e zehra pukari sar-e-karbala
tune saqqayi ka haq ada kar diya
wah mere laal....
mere ghazi jari....
Noha - Wah Mere Laal Abbas
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online