پہنچے حسین قاسمِ بے کس کی لاش پر
دیکھا وہ حال کر نہ سکے دوسری نظر
پہلو میں بیٹھ کر یہ صدا کی با چشمِ تر
ہم لینے آئے ہیں دولہا اُٹھو اُٹھو
اُٹھو زمینِ گرم سے بیٹا اُٹھو اُٹھو

قاسم تمہاری ماں کو تمہارا ہے انتظار
خیمے کے در پہ بالی سکینہ ہے بیقرار
دادا کا نام لے کے اُٹھو میرے جانثار
سوتے نہیں ہیں خاک پہ دولہا اُٹھو اُٹھو
اُٹھو زمینِ گرم ۔۔۔۔۔

تصویرِ درد بن گئی کبریٰ کی زندگی
جاگا ہی تھا نصیب کے تقدیر سو گئی
کنگنا ابھی کھُلا نہیں اور مانگ اُجڑ گئی
کبریٰ بنائی جاتی ہے بیوہ اُٹھو اُٹھو
اُٹھو زمینِ گرم ۔۔۔۔۔

فوجِ ستم شِعار بڑا ظلم کر گئی
کیا پھُول سے بدن پہ قیامت گُزر گئی
بھائی کی یاد گار زمیں پر بکھر گئی
دل خون ہو رہا ہے ہمارا اُٹھو اُٹھو
اُٹھو زمینِ گرم ۔۔۔۔۔


pahunchay hussain qasime bekas ki laash par
dekha wo haal kar na sake doosri nazar
pehlu may baith kar ye sada ki ba-chashme tar
hum lene aaye hai dulha utho utho
utho zameene garm se beta utho utho

qasim tumhari maa ko tumhara hai intezar
khaimay ke dar pa bali sakina hai beqaraar
dada ka naam leke utho mere jaanisar
sotay nahi hai khaak pa dulha utho utho
utho zameene garm....

tasveer-e-dard bangayi kubra ki zindagi
jaaga hi tha naseeb ke taqdeer sogayi
kangna abhi khula nahi aur maang ujad gayi
kubra banayi jaati hai bewa utho utho
utho zameene garm....

fauje sitam shiyaar bada zulm kar gayi
kya phool se badan pa qayamat guzar gayi
bhai ki yaadgar zameen par bikhar gayi
dil khoon ho raha hai hamara utho utho
utho zameene garm....
Noha - Utho Zameen e Garm

Nohaqan: Askar Ali Khan
Download Mp3
Listen Online