پروان چڑھا لو ں کوئی ارمان نکالوں
ٹھہرو علی اکبر تمہیں دولہا تو بنا لوں

یوں گھر سے میرے لال کو لے جائیے نہ حضرت
سایہ کرے آنچل کا میں بہنوں کو بُلا لوں
ٹھہرو علی اکبر۔۔۔۔۔

اے لال تیرے بیاہ کا زینب کو تھا ارمان
ا ن خون بھرے ہاتھوں میں میں مہندی تو لگا لوں
ٹھہرو علی اکبر۔۔۔۔۔

شاید یوں ہی تھم جائے لہو زخمِ جگر کا
اُٹھو علی اکبر میں کلیجے سے لگا لوں
ٹھہرو علی اکبر۔۔۔۔۔

ٹھہرائو جنازہ مجھے حسرت تو نہ رہ جائے
تابوت پہ پھولوں کا میں سہرا تو چڑھا لوں
ٹھہرو علی اکبر۔۔۔۔۔

شوکت پہ ذرا رحم کر اے موت ٹھہر جا
آنکھوں پہ مزارِ شاہِ مظلوم لگا لوں
ٹھہرو علی اکبر۔۔۔۔۔


parwan chadaloo koyi armaan nikaloo
tehro ali akbar tumhay dulha to banaloo

yun ghar se mere laal ko le jaaye na hazrat
saaya kare aanchal ka mai behno ko bula loo
tehro ali akbar....

ay laal tere byaah ka zainab ko tha armaan
in khoon bhare haathon may mai mehendi to laga loo
tehro ali akbar....

shayad yuhin tham jaaye lahoo zakhme jigar ka
utho ali akbar mai kaleje se laga loo
tehro ali akbar....

tehrao janaza mujhe hasrat to na reh jaye
taboot pa phoolon ka mai sehra to chadha loo
tehro ali akbar....

shaukath pa zara rehm kar ay maut teher ja
aankhon pe mazaare shahe mazloom laga loo
tehro ali akbar....
Noha - Tehro Ali Akbar
Shayar: Shaukath
Nohaqan: Askar Ali Khan
Download Mp3
Listen Online