تمام شب رہی خیموں کی پاسباں زینب
ہزار رنج و مصیبت میں ناتواں زینب

علی کی بیٹی نے چھُپنے دیا نہ خونِ حُسین
سبب تو ہمت و جرا،ت کا ہے بیاں زینب
تمام شب رہی ۔۔۔۔۔

وہ داغ دل پہ تھے جینا محل تھا لیکن
تھی اک سہارا اسیروں کے درمیاں زینب
تمام شب رہی ۔۔۔۔۔

کبھی تو کوفہ کبھی شام اور کبھی دربار
پھِری اسیری میں در در کہاں کہاں زینب
تمام شب رہی ۔۔۔۔۔

بھتیجے بھانجے بیٹے نہ کوئی بھائی رہا
ہے ایک رنج و مصیبت کی داستاں زینب
تمام شب رہی ۔۔۔۔۔

گُزر کے کوفے سے بالوں سے منہ چھُپائے ہوئے
چلی ہے شام میں دینے کو امتحاں زینب
تمام شب رہی ۔۔۔۔۔

نبی کا عزم علی کا جلال عزمِ حُسین
تھی شام و کوفے میں کس کس کی ترجمہ زینب
تمام شب رہی ۔۔۔۔۔

عروج دین کا ذکر ِ حُسین سے ہے عروج
یہ عام کر گئی پیغامِ خستہ جاں زینب
تمام شب رہی ۔۔۔۔


tamam shab rahi qaimo ki pasban zainab
hazaar ranj o musibat may natawan zainab

ali ki beti ne chupne diya na khoone hussain
sabab to himmat o jurrat ka hai bayan zainab
tamam shab rahi....

wo daagh dil pe thay jeena muhaal tha lekin
thi ek sahara aseeron ke darmiyan zainab
tamam shab rahi....

kabhi to koofa kabhi sham aur kabhi darbar
phiri aseeri may dar dar kahan kahan zainab
tamam shab rahi....

bhatije bhanje bete na koi bhai raha
hai ek ranj o musibat ki daastan zainab
tamam shab rahi....

guzar ke koofe se balon se moo chupaye huye
chali hai sham may dene ko imtehan zainab
tamam shab rahi....

nabi ka azm ali ka jalaal azme hussain
thi sham o koofe may kis kis ki tarjuma zainab
tamam shab rahi....

urooj deen ka zikr e hussain se hai urooj
ye aam kar gayi paighame khastajan zainab
tamam shab rahi....
Noha - Tamam Shab Rahi
Shayar: Urooj Bijnori
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online