سُن لو اپنی بیٹی کے آخری بیاں بابا
بند ہونے والی ہے اب میری زباں بابا

دیکھ لو جو باقی تھے وہ بھی امتحاں بابا
گر پڑا یتیمی کا سر پہ آسماں بابا
سُن لو اپنی بیٹی کے ۔۔۔۔۔

جب میرا جواں بھیا ایڑیاں رگڑتا تھا
چُبھ رہی تھی میرے بھی دل میں برچھیاں بابا
سُن لو اپنی بیٹی کے ۔۔۔۔۔

چھِن چُکی ہر اک چادر جل چُکا ہراک خیمہ
لُٹ گئی سبھی دولت رہ گئے نشاں بابا
سُن لو اپنی بیٹی کے ۔۔۔۔۔

کان ہو گئے زخمی گال ہو گئے نیلے
ظالموں نے یوں چھینی میری بالیاں بابا
سُن لو اپنی بیٹی کے ۔۔۔۔۔

ہم تمہارے سینے پر سو چکے جو سونا تھا
نیند بھی وہیں پہنچی آپ ہیں جہاں بابا
سُن لو اپنی بیٹی کے ۔۔۔۔۔

قید کے اندھیرے میں گھُٹ رہا ہے دم میرا
اب نہیں سہی جاتی اور سختیاں بابا
سُن لو اپنی بیٹی کے ۔۔۔۔۔

کب جلا میرا دامن یہ خبر نہیں مجھ کو
سامنے تھا آنکھوں کے دور تک دھواں بابا
سُن لو اپنی بیٹی کے ۔۔۔۔۔


sunlo apni beti ke aakhri bayan baba
bandh hone wali hai ab meri zuban baba

dekhlo jo baakhi thay wo bhi imtihan baba
gir pada yateemi ka sar pe aasman baba
sunlo apni beti ke....

jab mera jawan bhaiya aediyan ragadta tha
chub rahi thi mere bhi dil may barchiyan baba
sunlo apni beti ke....

chin chuki har ek chadar jal chuka har ek qaime
lut gayi sabhi daulat reh gaye nishan baba
sunlo apni beti ke....

kaan hogaye zakhmi gaal hogaye neele
zaalimo ne yun cheeni meri baliyan baba
sunlo apni beti ke....

hum tumhare seene par so chuke jo sona thay
neendh bhi wahin pahunchi aap hai jahan baba
sunlo apni beti ke....

qaid ke andhere may ghut raha hai dam mera
ab nahi sahi jaati aur sakhtiyan baba
sunlo apni beti ke....

kab jaala mera daaman ye khabar nahi mujhko
saamne tha aankhon ke door tak dhuan baba
sunlo apni beti ke....
Noha - Sunlo Apni Beti Ke

Nohaqan: Mirza Sikander Ali
Download Mp3
Listen Online