دُنیا میں جب ظہور ہوا تھا حسین کا
ہر وقت اپنی گود میں رکھتی تھی سیدہ
لوری سُنائے ماں تو وہ سوتا تھا لاڈلا
مدت کے بعد پھر سرِ میدانِ کربلا
زحمت حسین کے لیے ماں نے اُٹھائی ہے
لوری سُنانے بیٹے کو تُربت سے آئی ہے

لوری سمجھ کے آج تُو مادر کی سسکیاں
سو جا میرے حسین

کس طرح رہتی فاطمہ زہرا مزار میں
بابا سے پُوچھ حال تیرے انتظار میں
مقتل کے آ کے بیٹھی کل شب سے تیری ماں
سو جا میرے حسین۔۔۔۔۔

آغوش میں میری تیرا سر ہے رکھا ہوا
کتنے دنوں کے بعد یہ موقع مجھے ملا
یاد آ رہا ہے تیسری شعبان کا سماں
سو جا میرے حسین۔۔۔۔۔

اے لال اپنی ذات میں خود کربلا ہے تُو
لاشے اُٹھا اُٹھا کے بہت تھک گیا ہے تُو
کچھ دیر ماں کی گود میں آرام سے یہاں
سو جا میرے حسین۔۔۔۔۔

آنکھیں تڑپ کے کھولتا ہے کس لیے بھلا
اکبر کی شکل پھرتی ہے نظروں میں تیری کیا
بیٹے کا درد کیا ہے یہ بس جانتی ہے ماں
سو جا میرے حسین۔۔۔۔۔

میں جانتی ہوں یہ میری لوری ہے آخری
سوئے گا آج تُو تو نہ جاگے گا پھر کبھی
اس دل سے پُوچھ کس طرح دیتی ہوں لوریاں
سو جا میرے حسین۔۔۔۔۔

ثقلین گہری نیند وہ اُس وقت سو گیا
لوری کے درمیان وہ مادر نے یہ کہا
دیکھا نہ تُجھ سے جائے گا زینب کا کارواں
سو جا میرے حسین۔۔۔۔۔


dunya may jab zahoor hua tha hussain ka
har waqt apne godh may rakhti thi sayyeda
lori sunaye maa to wo sota tha laadla
muddat ke baad phir sare maidane karbala
zehmat hussain ke liye maa ne uthaayi hai
lori sunane bete ko turbat se aayi hai

lori samajh ke aaj tu maadar ki siskiyan
soja mere hussain

kis tarha rehti fatema zehra mazaar may
baba se pooch haal tere intezaar may
maqtal ke aake baithi kal shab se teri maa
soja mere hussain....

aaghosh may meri tera sar hai rakha hua
kitne dino ke baad ye mauka mujhe mila
yaad aa raha hai teesri shaban ka saman
soja mere hussain....

ay laal apni zaat may khud karbala hai tu
laashe utha utha ke bahot thak gaya hai tu
kuch dayr maa ki godh may aaram se yahan
soja mere hussain....

aankhein tadap ke kholta hai kisliye bhala
akbar ki shakl phirti hai nazron may teri kya
bete ka dard kya hai ye bas jaanti hai maa
soja mere hussain....

mai jaanti hoo ye meri lori hai aakhri
soyega aaj tu to na jaagega phir kabhi
is dil se pooch kis tarha deti hoo loriyan
soja mere hussain....

saqlain gehri neendh wo us waqt sogaya
lori ke darmiyan wo madar ne ye kaha
dekha na tujhse jaayega zainab ka kaarwan
soja mere hussain....
Noha - Soja Mere Hussain
Shayar: Saqlain Akbar
Nohaqan: Shahid Baltistani
Download Mp3
Listen Online