شام کے بڑھتے ہوئے سائے مُصیبت کی گھڑی
اور شام کے بڑھتے ہوئے سائے

تڑپتی رہ گئی ماں اور علی اکبر نہیں آئے
مُصیبت کی گھڑی

گزر جانا ہی لکھا ہے جوانی میں اگر یا رب
گزرنے سے علی اکبر کے پہلے ماں گزر جاتی
مُصیبت کی گھڑی

وہی اندازہ کر سکتا ہے دردِ قلبِ لیلٰی کا
نظر کے سامنے جس کے جواں بیٹا سِناں کھائے
مُصیبت کی گھڑی

جواں کی لاش پیری میں اُٹھانا اک قیامت ہے
یہ دن اللہ دُنیا میں کسی کو بھی نہ دکھلائے
مُصیبت کی گھڑی

سنبھل کر کھینچیئے گا قلبِ اکبر سے سِناں مولا
اُلجھ کر نوکِ نیزہ میں جگر باہر نہ آ جائے
مُصیبت کی گھڑی

زمیں تھرا گئی اکبر کا لاشہ رکھ کہ ریتی پر
حُسین ابنِ علی جب شکر کا سجدہ بجا لائے
مُصیبت کی گھڑی

زے سر تا پائوں زخمی ہو گیا لختِ دلِ زہرا
لعینوں نے تنِ سرور پہ اتنے تیر برسائے
مُصیبت کی گھڑی

میں ذاکر ہوں حُسین ابنِ علی کا یہ دُعا کیجیئے
شرف یہ نسل سے میری قیامت تک نہیں جائے
مُصیبت کی گھڑی


sham ke badte huve saaye musibat ki ghadi
aur sham ke badte huve saaye

tadapti reh gayi maa aur ail akbar nahi aaye
musibat ki ghadi

guzar jaana hi likha hai jawani may agar ya rab
guzarne se ali akbar ke pehle maa guzar jaye
musibat ki ghadi

wohi andaza kar sakta hai darde qalbe laila ka
nazar ke saamne jiske jawan beta sina khaaye
musibat ki ghadi

jawan ki laash peeri may uthana ek qayamat hai
ye din allah dunya may kisi ko bhi na dikhlaye
musibat ki ghadi

sambhal kar khaynchiyega qalbe akbar se sina maula
ulajh kar nauke naiza may jigar bahar na aajaye
musibat ki ghadi

zameen tharra gayi akbar ka laasha rakh ke reti par
hussain ibne ali jab shukr ka sajda baja laaye
musibat ki ghadi

ze sar ta paon zakhmi hogaya lakhte dile zehre
layeeno ne tane sarwar pe itne teer barsaye
musibat ki ghadi

mai zakir hoo hussain ibne ali ka ye dua kijay
sharaf ye nasl se meri qayamat tak nahi jaaye
musibat ki ghadi
Noha - Sham Ke Badte Huve Saaye

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online