شبیر نوجواں کے لاشے پہ آ رہے ہیں
کرب و بلا میں اعدا خوشیاں منا رہے ہیں

عباس اُٹھ کے دیکھو یہ بے بسی کا عالم
اکبر کی لاش اب وہ تنہا اُٹھا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔

کرب و بلا کے بن میں ہے کس قدر خاموشی
بھائی کو خط بہن کا سرور سُنا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔

سرور کی ہے ضعیفی اور نوجواں پسر ہے
میت اُٹھا تو لی ہے پر لڑ کھڑا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔

میت جوان کی رکھ کے خیمے میں شاہِ والا
چھ ماہ کے پسر کو میداں میں لا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔

یا رب کہیں سکینہ غم سے گُزر نہ جائے
اکبر کی لاش سرور خیمے میں لا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔

سُوکھی زباں دیکھا کہ ہاتھوں پہ شاہِ دیں کے
فوجِ عدُو کو اصغر رن میں رُلا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔

خیمے کے در سے ماں نے دیکھا عجیب منظر
تیرِ ستم سے اصغر پہلو بچا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔

جو آشنا ہیں اشرف محبوبِ کبریائ سے
اولادِ فاطمہ کا وہ غم منا رہے ہیں
شبیر نوجواں کے ۔۔۔۔۔


shabbir naujawan ke laashe pe aa rahe hai
karbobala may aada khushiyan mana rahe hai

abbas uthke dekho ye bebasi ka aalam
akbar ki laash ab wo tanha utha rahe hai
shabbir naujawan ke....

karbobala ke ban may hai kis khadar khamoshi
bhai ko khat behan ka sarwar suna rahe hai
shabbir naujawan ke....

sarwar ki hai zaeefi aur naujawan pisar hai
mayyat utha to li hai par larkhada rahe hai
shabbir naujawan ke....

mayyat jawan ki rakh ke qaime may shaahe wala
cheh maah ke pisar ko maidan may laa rahe hai
shabbir naujawan ke....

ya rab kahin sakina gham se guzar na jaaye
akbar ki laash sarwar qaime may laa rahe hai
shabbir naujawan ke....

sookhi zaban dikha ke haathon pe shaahe deen ke
fauje adoo ko asghar ran may rula rahe hai
shabbir naujawan ke....

qaime ke dar se maa ne dekha ajeeb manzar
teere sitam se asghar pehloo bacha rahe hai
shabbir naujawan ke....

jo aashna hai ashraf mehboobe kibriya se
aulaade fathima ka wo gham mana rahe hai
shabbir naujawan ke....
Noha - Shabbir Naujawan Ke
Shayar: Ashraf
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online