جب تک بھی رہے ذندا سجاد کا نوحہ تھا
شام نے مار دیا مجھے شام نے ماردیا

کیسے نہ بہے خوں آنکھوں سے خنجر ہی چلا ہے ایسا
دم میری جوانی توڑچکی بازار ہے مقتل میرا
وللہ میں زندہ ہوں کہنے کے لیئے ورنہ
شام نے مار دیا ۔۔۔

پھر جاتا ہے میری نظروں میں بازارِ شام کا منظر
محسوس یہ ہوتا ہے مجھ کو ہے ساتھ پھپی بے چادر
تے مجھ سے نہیں ہوتا بازار مدینے کا
شام نے مار دیا ۔۔۔

کہتی ہے شریعت سر نہ کھولے آوازِ اذان جب آئے
پر اہلِ حرم سر پر اپنے ہاتھوں کو بھی رکھ نہ پائے
رسی نے اسیروں کواِس طرح سے جکڑا تھا
شام نے مار دیا ۔۔۔

میراث شہادت ہے میری کیا یہ بھی ورثہ تھا
پھپیوں کو لئے بے چادر اس شہر سے گزرا تھا
سجاد کا مقتل ہے اس شہر کا ہر کوچہ
شام نے مار دیا ۔۔۔

جب ہاتھ دُعا کو اُٹھتے ہیں دل غم سے میرا پہٹ جاتا ہے
آتی ہے سکینہ یاد مجھے محسوس یہی ہوتا ہے
جیسے میرے ہاتھوں پر رکھا ہے کوئی لاشہ
شام نے مار دیا ۔۔۔

گر اہلِ مدینہ تم اپنے گھر مجھ کو بُلانہ چاہو
خوشیوں میں کبھی آسکتا نہیںمجلس کا فرش بچھوائو
باقی نہیں خوشیوں سے اب کوئی میرا رشتہ
شام نے مار دیا ۔۔۔

بازار میں زینب کا جانا کیا موت سے کم ایزا تھا
کیوں زہردیا ظالم مجھ کو اب اس کی ضرورت کیا تھی
پہلے ہی تکلم جب کہتا تھا میرا مولا
شام نے مار دیا ۔۔۔


jab tak bhi rahe zinda sajjad ka nauha tha
sham ne maar diya mujhe sham ne maar diya

kaise na bahe khoon aankhon se khanjar hi chala hai aisa
dam meri jawani tod chuki bazaar hai maqtal mera
wallah mai zinda hoo kehne ke liye warna
sham ne maar diya....

phir jaata hai meri nazron may bazaar e sham ka manzar
mehsoos ye hota hai mujhko hai saath phupi be chadar
tay mujhse nahi hota bazaar madine ka
sham ne maar diya....

kehti hai shariyyat sar na khule awaaze azan jab aaye
par ahle haram sar par apne haathon ko bhi rakh na paaye
rassi ne aseero ko is tarha se jakda tha
sham ne maar diya....

meeraas shahadat hai meri kya ye bhi wirsa tha
phupiyon ko liye bechadar is shehr se guzra tha
sajjad ka maqtal hai is shehr ka har kooja
sham ne maar diya....

jab haath dua ko uth-te hai dil gham se mera phat ta hai
aati hai sakina yaad mujhe mehsoos yehi hota hai
jaise mere haathon par rakha hai koi laasha
sham ne maar diya....

gar ahle madina tum apne ghar mujhko bulaana chaho
khushiyo may kabhi aa sakta nahi majlis ka farsh bichao
baakhi nahi khushiyo se ab koi mera rishta
sham ne maar diya....

bazaar may zainab ka jaana kya maut se kam eeza thi
kyun zehr diya zaalim mujhko ab iski zaroorat kya thi
pehle hi takallum jab kehta tha mera maula
sham ne maar diya....
Noha - Shaam Ne Maar Diya
Shayar: Mir Takallum
Nohaqan: Mir Hassan Mir
Download Mp3
Listen Online