سرور کے غم کو سینے سے اپنے لگائیں گے
ہم دل کو کربلائے معلیٰ بنائیں گے

جب شاہ لاشئہ علی اکبر اُٹھائیں گے
عباسِ نامدار بہت یاد آئیں گے

خیمے جلا رہے جو وہ آلِ رسول کے
محشر میں وہ رسول کو کیا منہ دیکھائیں گے

لیلیٰ خدا کے واسطے جی بھر کے دیکھ لے
میدان سے لوٹ کر علی اکبر نہ آئیں گے

ہوتی رہیں گی تیز یوں ہی دل کی دھڑکنیں
اصغر کو ہم خیال میں جھولا جھُلائیں گے

ہے سارا جسم گھوڑوں کی ٹاپوں سے پائمال
شبیر کیسے لاشئہ قاسم اُٹھائیں گے

ہم زندگی تمام کریں گے علی کا ذکر
ہم عمر بھر حسین پر آنسو بہائیں گے

مجھ کو یقین ہے موت سے پہلے ہی اے سعید
بالی پہ میری حیدرِ کرار آئیں گے


sarwar ke gham ko seene se apne lagayenge
hum dil ko karbala-e-mualla banayenge

jab shah laashaye ali akbar uthayenge
abbas e naamdaar bahot yaad aayenge

qaime jala rahe jo wo aale rasool ke
mehshar may wo rasool ko kya moo dikhayenge

laila khuda ke waaste jee bhar ke dekhle
miadan se laut kar ali akbar na aayenge

hoti rahegi tez yuhin dil ki dhadkane
asghar ko hum khayaal may jhoola jhulayenge

hai saara jism ghodon ki tapon se payemaal
shabbir kaise laashaye qasim uthayenge

hum zindagi tamam karenge ali ka zikr
hum umr bhar hussain par aansoo bhayange

mujhko yaqeen hai maut se pehle hi ay sayeed
bali pe meri hydare karrar aayenge
Noha - Sarwar Ke Gham
Shayar: Sayeed
Nohaqan: Mirza Sikander Ali
Download Mp3
Listen Online