سلام پہلی عزادار ثانیئے زہرا
حسینیت کی نگہدار ثانیئے زہرا

حسین جس کے لیے زندگی تڑپتی ہے
وہ اک نام کہ جس پر مادرِ ہستی ہے
کے جس کے ذکر سے باطل سپاہ ڈرتی ہے
اُسی حسین کا کردار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

اس عہدِ نو میں خوابیدہ جو مسلماں ہیں
بجائے دین ذر و مال کے وہ خواہاں ہیں
مگر وہ لوگ کے جو اب بھی اہلِ ایماں ہیں
تیرے سبب سے ہے کردار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

بقائے دیں کا ہر اک رستہ جو بند ہوا
بوقت عصر جب اسلام فکر مند ہوا
اُدھر سے نیزے پہ سر شاہ کا بلند ہوا
ادھر سے بن گئی تلوار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

قدم محاذ پہ رکھا تو کامیاب رکھا
جلال و ضبط میں اندازِ بوتراب رکھا
علی کے لہجے سے آواز کا حجاب رکھا
سند ہے وہ تیری گُفتار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

سمجھ سکے تو سمجھ گفتگو کا دھب کیا ہے
زمیں پر تیری تکلیق کا سبب کیا ہے
یزیدِ نحس تیرا شجرئہ نصب کیا ہے
سُنائے گی سرِ دربار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

بڑھے سرور جو اہلِ حرم کو دہلانے
ردائیں چھین لی جس دم سروں سے اعدا نے
تڑپ کے رہ گئے بے دست کے کٹے شانے
ترس کے رہ گئی لاچار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

تمام شہر میں یہ ہر طرف منادی ہے
کہ جس کو شمر نے دُرّوں سے بھی سزا دی ہے
سُنو سُنو اسی کوفے کی شہزادی ہے
کہ ذکر ہے سرِ بازار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

یتیمِ شاہ اندھیرے میں کھو گئی آخر
لہوکو اپنے ہی اشکوں سے دھو گئی آخر
اُسی پھٹے ہوئے کُرتے میں سو گئی آخر
کفن نہ دے سکی ناگار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

کبھی فرا،ت نظر میں کبھی ترائی ہے
نگاہ میں لحدِ شاہِ کربلائی ہے
گری ہے اونٹ سے گھُٹنوں سے چل کے آئی ہے
غریب و بے کس و ناچار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

وطن ہے شدتِ گریہ ہے اور زینب ہے
نبی کی قبر ہے صغریٰ ہے اور زینب ہے
لہو بھرا ہوا کُرتا ہے اور زینب ہے
لُٹا کے آئی ہے گھر بار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔

اُداس آنگن و دیوار در لگے گھر کے
نہ بین رُک سکے شاہد غریب مادر کے
وہ پہلی بار جو بیٹوں کو روئی جی بھر کے
اسیرِ رنج و دلفگار ثانیئے زہرا
سلام پہلی ۔۔۔۔۔


salam pehli azadar saniye zehra
hussainiyat ki nigehdar saniye zehra

hussain jiske liye zindagi tadapti hai
wo ek naam ke jis par madar e hasti hai
ke jiske zikr se batil sipah darti hai
usi hussain ka kirdar saniye zehra
salam pehli....

is ehday no may bhi khabida jo musalma hai
bajaye deen zaro maal ke wo khaaha hai
magar wo log ke jo ab bhi ahle emaan hai
tere sabab se hai kirdar saniye zehra
salam pehli....

baqae deen ka har ek raasta jo bandh hua
ba waqte asr jab islam fiqr mandh hua
udhar se naize pe sar shah ka balandh hua
idhar se bangayi talwar saniye zehra
salam pehli....

khadam mahaz pe rakha to kamiyab rakha
jalal-o-zabt may andaze bu-turab rakha
ali ke lehje se awaaz ka hijab rakha
sanad hai wo teri guftar saniye zehra
salam pehli....

samajh sakay to samajh guftagu ka dhab kya hai
zameen par teri taqleeq ka sabab kya hai
yazeede nehes tera shajrae nasab kya hai
sunayegi sare darbar saniye zehra
salam pehli....

badhe sawar jo ahle haram ko dehlaney
ridaye cheenli jis dam saro se aada ne
tadap ke rehgaye bedast ke kate shane
taras ke rehgayi lachaar saniye zehra
salam pehli....

tamam shehr may ye har taraf manadi hai
ke jisko shimr ne durro se bhi saza di hai
suno suno isi koofe ki shahzadi hai
ke zikr hai sare bazaar saniye zehra
salam pehli....

yateeme shah andhere may khogayi aakhir
lahoo ko apne hi ashkon se dho gayi aakhir
usi phate hue kurte may so gayi aakhir
kafan na de saki nagaar saniye zehra
salam pehli....

kabhi furaat nazar may kabhi tarayi hai
nigah may lehede shahe karbalayi hai
giri hai oonth se ghutno se chalke aayi hai
ghareeb o bekas o nachaar saniye zehra
salam pehli....

watan hai shiddate girya hai aur zainab hai
nabi ki qabr hai sughra hai aur zainab hai
lahoo bhara hua kurta hai aur zainab hai
luta ke aayi hai ghar baar saniye zehra
salam pehli....

udaas aangan o deewar dar lagay ghar ke
na bain ruk sakay shahid ghareeb madar ke
wo pehli baar jo beton ko royi jee bhar ke
aseere ranjo dilafgar saniye zehra
salam pehli....
Noha - Salam Pehli Azadar
Shayar: Shahid Jafer
Nohaqan: Ali / Razi
Download Mp3
Listen Online