روئی سکینہ سر نہوڑائے پانی چچا کیوں نہیں لائے
در پہ کھڑی ہوں آس لگائے پانی چچا کاہے نہیں لائے
روئی سکینہ سر نہوڑائے

خالی کوزہ ہاتھ میں تھامے راہ تکتی ہے کب سے بچی
کوئی تو اس کی آس بندھائے پانی چچا کاہے نہیں لائے
روئی سکینہ سر نہوڑائے

کب کے گئے تھے لینے پانی بھول گئے کیا ہمری کہانی
اب کون ہمری پیاس بجھائے پانی چچا کاہے نہیں لائے
روئی سکینہ سر نہوڑائے

مشک و علم جب لے کے گئے تھے بچے رستہ دیکھ رہے تھے
پوچھت ہے ہم سے کون بچائے پانی چچا کاہے نہیں لائے
روئی سکینہ سر نہوڑائے

بنتی کرت ہوں کوئی یہ کہہ دے نہر پہ جا کر مورے عمو سے
پانی بھرے اب تک نہیں آئے پانی چچا کاہے نہیں لائے
روئی سکینہ سر نہوڑائے

خیمے جلت میں چھینٹ ہیں چادر لیگوا مورا بندہ ستمگر
عموں کو میرے کوئی گھوئے لائے پانی چچا کاہے نہیں لائے
روئی سکینہ سر نہوڑائے

محسن ابھی تک خوں ہے رلاتی پیاس سکینہ اور اصغر کی
بس یہ صدا مورا دل تڑپائے پانی چچا کاہے نہیں لائے
روئی سکینہ سر نہوڑائے


royi sakina sar ne hudaye pani chacha kahe nahi laaye
dar pa khadi hoo aas lagaye pani chacha kahe nahi laaye
royi sakina....

khaali kuza haath ma thame raah taqat hai kabse bache
koi to unki aas bandhaye pani chacha kahe nahi laaye
royi sakina....

kabke gaye thay lene pani bhool gaye ka hamri kahani
ab kaun hamri pyas bujhaye pani chacha kahe nahi laaye
royi sakina....

mashko alam jab leke gaye thay bache rasta dekh rahe thay
poochat hai hamse kaun bataye pani chacha kahe nahi laaye
royi sakina....

binti karat hoo koi ye kehde nehr pa jaakar moray ammu se
pani bhari ab tak nahi aaye pani chacha kahe nahi laaye
royi sakina....

qaimay jalat hai chenat hai chadar laygawa mora bunda sitamgar
ammu ko mere koi goheye laye pani chacha kahe nahi laaye
royi sakina....

mohsin abhi tak khoon hai rulaati pyas sakina aur asghar ki
bas ye sada mora dil tadpaye pani chacha kahe nahi laaye
royi sakina....
Noha - Royi Sakina
Shayar: Mohsin
Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online