رو رو پکاری بالی سکینہ
عمو گھر آجائیے

بابا جب سے رن کو سدھارے
بیٹھے ہیں در پر آس لگائے
پانی اب تک آپ نہ لائے
اتنا نہ اب تڑپائیں
عمو گھر آجائیے

اکبر بھائی رن سے آئو
غم کی ماری سے مل جائو
بہنا کو اپنا حال سنائو
صورت آکے دکھائیے
عمو گھر آجائیے

راکھ ہوئے سب خیمے جل کر
مارے طمانچے شمر نے آکر
جل گیا ہائے ہائے بھیا کا بستر
ظلم سے ہم کو بچائیے
عمو گھر آجائیے

سونا جنگل رات ہے کالی
کون کرے گا اب رکھوالی
گودی اماں کی ہے خالی
اصغر کو لے آئیے
عمو گھر آجائیے

ڈوب گئے سب چاند اور تارے
اکبر اور اصغر گئے مارے
دکھیا مادر کس کو پکارے
ظلم سے سب کو بچائیے
عمو گھر آجائیے

ایک بھائی بیمار پڑا ہے
اس پر بھی یہ ظلم و جفا ہے
طوق و سلاسل میں جکڑا ہے
قید سے اس کو چھڑائیے
عمو گھر آجائیے

کوچ کی ہوتی ہے تیاری
آئی محمل اور نہ عماری
بے پردہ ہے آل یہ ساری
رستے سے سب کو ہٹائیے
عمو گھر آجائیے

صدقے میں آل اور قرآں کے
سائے میں اس قومی نشاں کے
دور ہوئے غم سارے جہاں کے
انجم کو بھی بچائیے
عمو گھر آجائیے


ro ro pukari bali sakina
ammu ghar aajaiye

baba jab se ran ko sidhare
baithe hai dar par aas lagaaye
paani ab tak aap na laaye
itna na ab tadpaiye
ammu ghar....

akbar bhai ran se aao
gham ki maari se mil jaao
behna ko apna haal sunao
surat aake dikhaaiye
ammu ghar....

raaq hue sab qaime jal kar
maare tamache shimr ne aakar
jalgaya hai hai bhaiya ka bistar
zulm se humko bachaiye
ammu ghar....

suna jangal raat hai kaali
kaun karega ab rakhwali
godi amma ki hai khaali
asghar ko le aaiye
ammu ghar....

doob gaye sab chand aur taare
akbar aur asghar gaye maare
dukhiya maadar kisko pukaare
zulm se sab ko bachaiye
ammu ghar....

ek bhai bemaar pada hai
us par bhi ye zulmo jafa hai
tauq-o-salaasal may jakda hai
qaid se usko chudaaiye
ammu ghar....

kooch ki hoti hai tayyari
aayi mehmil aur na amaari
be-parda hai aal ye saari
raste se sab ko hataiye
ammu ghar....

sadke mai aal aur quran ke
saaye may is qaumi nishaan ke
door rahe gham saare jahan ke
anjum ko bhi bachaiye
ammu ghar....
Noha - Ro Ro Pukari
Shayar: Anjum
Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online