رہنے کے لیئے دل میں ہے شبیر کی صورت
آئینہ بدلتا نہیں تصویر کی صورت
رہنے کے لیئے ۔۔۔۔۔

حسنین و نبی حیدر و زہرا ہیں کِسآئ میں
تفسیر کے پیکر میں ہے تطہیر کی صورت
رہنے کے لیئے ۔۔۔۔۔

قربانیئِ شبیر خلیل آپ بھی دیکھیں
یوں خواب کو مل جاتی ہے تعبیر کی صورت
رہنے کے کے لیئے ۔۔۔۔۔

کیا جھپٹے ہیں دُشمن پہ حبیب ابنِ مظاہر
جو مثلِ کماں تھے وہ گئے تیر کی صورت
رہنے کے لیئے ۔۔۔۔۔

اب اور نہ دنیا میںخلیل اور نہ شبیر
ہر خواب دکھاتا نہیں تعبیر کی صورت
رہنے کے لیئے ۔۔۔۔۔

ھَل مِن کی صدائوں پہ مچلتے تھے جو اصغر
ماں دیکھ کے رہ جاتی تھی بے شیر کی صورت
رہنے کے لیئے ۔۔۔۔۔

جب آیا ہے سجاد کے قدموں کا تصور
اشکوں میں اُتر آئی ہے زنجیر کی صورت
رہنے کے لیئے ۔۔۔۔۔

باطل کی فضائوں میں وصی حق کے فدائی
حُر بن کے بدلتے ہیں تقدیر کی صورت
رہنے کے لیئے ۔۔۔۔۔


rehne ke liye dil may hai shabbir ki surat
aeena badalta nahi tasveer ki surat
rehne ke liye....

hasnain o nabi hai dar o zehra hai kisa may
tafseer ke paykar may hai tatheer ki surat
rehne ke liye....

qurbaniye shabbir khaleel aap bhi dekhein
yun khwab ko mil jati hai tabeer ki surat
rehne ke liye....

kya jhapte hai dushman pe habib ibne mazahir
jo misle kaman thay wo gaye teer ki surat
rehne ke liye....

ab aur na dunya may khaleel aur na shabbir
har khwab dikhata nahi tabeer ki surat
rehne ke liye....

hal min ki sadaon pe machalte thay jo asghar
maa dekh ke reh jati thi baysheer ki surat
rehne ke liye....

jab aaya hai sajjad ke qadmo ka tasavvur
ashkon may utar aayi hai zanjeer ki surat
rehne ke liye....

baatil ki fizaon may wasi haq ke fidayi
hurr banke badalte hai taqdeer ki surat
rehne ke liye....
Noha - Rehne Ke Liye Dil
Shayar: Wasi
Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online