قرآن اور حُسین
واللہ سرِ منہ فرق نہیں ہے
دونوں کے مابین

اُترا وہ قلبِ محمد پر
یہ زہرا کے گھر میں آیا
کعبہ کوثر ایک دوسرے سے ہونگے نہ کبھی یہ دونوں جُدا
دونوں ہیں نور ہے دونوں کی منزل کعبہ قوسین
قرآن اور حُسین

وہ خواب ہے اور تعبیر ہے یہ
وہ خاتا ہے تعمیر ہے یہ
فردوسِ دو عالم پر لکھی
تحریر ہے وہ تفسیر ہے یہ
محبوبِ الٰہی کے دل کا
یہ دونوں ہی ہیں چین
قرآن اور حُسین

وہ معجزہ ہے اعجاز ہے یہ
وہ نور ہے یہ اُس کا پیکر
پروان چڑھے ہیں یہ دونوں
آغوشِ پیعمبر میں پل کر
قرآن لبوں سے کھیلتا تھا
زُلفوں سے حسنین
قرآن اور حُسین

جاں وار کے حق پر شِہ نے کیا
قرآن کے دُشمن کو ابتر
قرآن صدائیں دیتا ہی
انا اعطینٰک الکوثر
باقی ہے نسل محمد کی
جب تک ہے نسلِ حُسین
قرآن اور حُسین

قرآن پیامِ احمد ہے
شبیر کلامِ احمد ہے
ان دونوں کے دم سے قائم
عالم میں نظامِ احمد ہے
اللہ و نبی کی حُجت ہے
یہ مابینِ کونین
قرآن اور حُسین

درسِ قرآن دیاشِہ نے
عالم کو اُسی تلواروں میں
اک حرفِ شہادت کی لکھ دی
تفسیر بہتر پاروں میں
قربان تیرے اے وارثِ علم
شاہِ بدرو حُنین
قرآن اور حُسین

قرآن کو نوکِ نیزہ پر
پھر تیر میں لے آئے اعدائ
مہمان بُلا کر سرور کو
پانی نہ دیا سر کاٹ لیا
سر کھولے ہوئے اک دُکھیاری
ماں کرتی رہ گئی بین
قرآن اور حُسین

افسوس نبی کی اُمت نے
ان دونوں ہی کی قدر نہ کی
نیزوں سے لگائے زخم کبھی
تیروں سے کیا زاہے زخمی
اُمت نے بعدِ پیعمبر
لوٹا دونوں کا چین
قرآن اور حُسین

صد ہیف نبی کی عطرت کو
تقدیر نے یہ دن دکھلایا
تا شام بلا کے میدان سے
نیزے پہ سرِ بازار گیا
قرآن سناتا لوگوں کو
زہرا کا نورِ عین


quran aur hussain
wallah sare moo farq nahi hai
dono ke ma bain

utra wo qalbe mohammed par
ye zehra ke ghar may aaya
kaaba kausar ek doosre se honge na khabi ye dono juda
dono hai noor hai dono ki maznil kaaba kausain
quran aur hussain

wo khwab hai aur tabeer hai ye
wo khaata hai tameer hai ye
firdaus e do aalam paar likhi
tehreer hai wo tafseer hai ye
mehboobe elaahi ke dil ka
ye dono hi hai chain
quran aur hussain

wo mojijza hai ejaaz hai ye
wo noor hai ye uska paikar
parwan chade hai ye dono
aaghose payambar may pal kar
quran labon se khelte tha
zulfon se hasnain
quran aur hussain

jaan waar ke haq par sheh ne kiya
quran ke dushman ko abtar
quran sadayein deta hai
inna aataina kal kausar
baakhi hai nasl mohammed ki
jab tak hai nasle hussain
quran aur hussain

quran payame ahmed hai
shabbir kalame ahmed hai
in dono ke dam se khayam
aalam may nizame ahmed hai
allah o nabi ki hujjat hai
ye maa bain e kaunain
quran aur hussain

dar se quran diya sheh ne
aalam ko usi talwaron may
ek harfe shahadat ki likhdi
tafseer bahattar paaron may
qurban tere ay warise ilme
shahe badr o hunain
quran aur hussain

quran ko noke naiza par
phir teer may le aaye aada
mehman bulakar sarwar ko
pani na diya sar kaat liya
sar khole hue ek dukhyari
maa karti rehgayi bain
quran aur hussain

afsos nabi ki ummat ne
in dono hi ki khadr na ki
naizon se lagaye zakhm kabhi
teeron se kiya zaahe zakhmi
ummat ne baade payghambar
loota dono ka chain
quran aur hussain

sad haif nabi ki itrat ko
taqdeer ne ye din dikhlaya
ta sham bala ke maidan se
naize pe sare bazaar gaya
quran sunata logon ko
dohrata noore ain
Noha - Quran Aur Hussain

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online