کیا قیامت سے یہ کم ہے
ہوئی محتاج چادر کی علی کی لاڈلی بیٹی قیامت اور کیا ہو گی
ہیں کلمہ گو تماشائی، جھُکی گردن ہے عابد کی
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔

جہاں سے فاصلہ دربار کا تھا چند قدموں کا
کئی گھنٹوں میں گزری ہے ، وہاں سے میری شہزادی
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔

سرِ بازار شامی اپنے بچوں سے یہ کہتے تھے
ستائو اس کو سب مل کر، بھتیجی ہے یہ غازی کی
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔

سکینہ سیدِ سجاد اور زہرا وہ ہستی ہیں
کہ جن پر وقت سے پہلے، ضعیفی ہو گئی طاری
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔

نہ جانیں کس طرح بدلے لیے ہیں شام والوں نے
علی اصغر کے جیسی ہے، لحد عباسِ غازی کی
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔

نہ اُٹھ سکتا تھا اور نہ بیٹھ سکتا تھا میرا کاظم
رکوع میں چودہ برسوں تک ،رہا بغداد کا قیدی
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔

امامِ وقت ہو کر ہائے وہ مظلوم ہے مہدی
لحد مسمار مادر کی، ہے اس بیٹے نے خود دیکھی
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔

کٹے بازو لیے عباس کے آئیں گی خود زہرا
میرے مظلوم کی مجلس، تکلم حشر میں ہو گی
قیامت اور کیا ہو گی، ہوئی محتاج چادر کی۔۔۔


kya qayamat se ye kam hai
hui mohtaj chadar ki ali ki laadli beti qayamat aur kya hogi
hai kalmago tamashayi, jhuki gardan hai abid ki
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....

jahan se faasla darbar ka tha chand qadmo ka
kayi ghanto may guzri hai, wahan se meri shehzadi
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....

sare bazaar shaami apne bachon se ye kehte thay
satao isko sab milkar, bhatiji hai ye ghazi ki
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....

sakina sayyede sajjad aur zahra wo hasti hai
ke jin par waqt se pehle, zaeefi hogayi taari
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....

na jaane kis tarha badle liye hai shaam walo ne
ali asghar ke jaisi hai, lehad abbas e ghazi ki
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....

na uth sakta tha aur na baith sakta tha mera kazim
ruku may chauda barson tak, raha baghdad ka qaidi
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....

imame waqt hokar haye wo mazloom hai mehdi
lehad mismaar madar ki, hai is bete ne khud dekhi
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....

kate baazu liye abbas ke aayengi khud zahra
mere mazloom ki majlis, takallum hashr may hogi
qayamat aur kya hogi, hui mohtaj chadar ki....
Noha - Qayamat Aur Kya Hogi
Shayar: Mir Takallum
Nohaqan: Shahid Baltistani
Download Mp3
Listen Online