قاسمِ حزیںاُٹھو لاش پر دولہن آئی

یاس نے یہ لاشے پر اپنی گود پھیلائی
تارے گرے ہستی سے موت بھی یہ گھبرائی
ماں سرہانے کہتی ہے جاگ لے کے انگڑائی
قاسمِ حزیںاُٹھو ۔۔۔۔۔

بیوگی کے عالم کی زندگی مصیبت ہے
مانگ میں کہاں صندل خاکِ خوں سے زینت ہے
چور شیشئہ دل ہے پارا پارا قسمت ہے
قاسمِ حزیںاُٹھو ۔۔۔۔۔

باندھ کر گئے سہرا جنگ کی یہ قسمت تھی
کیا ہمارے حصے میں ہوں چکا محبت تھی
موت بن گئی شادی ریت کیا قیامت تھی
قاسمِ حزیںاُٹھو ۔۔۔۔۔

جسم کے یہ ٹکڑے ہیں دینِ حق کے شہ پارے
کیسے جوڑے عضا کو ظلم و جور کے مارے
اپنی مجلسِ غم کے تم بھی کر لو نظارے
قاسمِ حزیںاُٹھو ۔۔۔۔۔

نو عروس کو یوں بھی کوئی ایذا دیتا ہے
چُن کے پھول زخموں کا کون تحفہ دیتا ہے
غم کے بھی علی فطرت کوئی ہدیہ دیتا ہے
قاسمِ حزیںاُٹھو ۔۔۔۔۔


qasime hazeen utho laash par dulhan aayi

yaas ne ye laashe par apni godh phailayi
taregire hasti se maut bhi ye ghabrayi
maa sarhane kehti hai jaag leke angdayi
qasime hazeen utho....

bewagi ke aalam ki zindagi musibat hai
maang may kahan sandal khaake khoon se zeenat hai
choor sheeshaye dil hai paara paara qismat hai
qasime hazeen utho....

baandh kar gaye sehra jang ki ye qismat thi
kya hamare hissay may hun chaka mohabbat thi
maut bangayi shadi reet kya qayamat thi
qasime hazeen utho....

jism ke ye tukde hai deene haq ke sheh-pare
kaise jode aaza ko zulm-o-jaur ke maare
apni majlise gham ke tum bhi karlo nazzare
qasime hazeen utho....

nau uroos ko yun bhi koi eeza deta hai
chunke phool zakhmo ka kaun tohfa deta hai
gham ke bhi ali fitrat koi hadya deta hai
qasime hazeen utho....
Noha - Qasime Hazeen Utho
Shayar: Maulana Ali Fitrat
Nohaqan: Mirza Sikander Ali
Download Mp3
Listen Online