قبر اصغر کی بنانے میں بہت دیر لگی
شہ کو اک چاند چھپانے میں بہت دیر لگی

کچھ قدم دور ہے بازار سے دربار مگر
پھر بھی شہزادی کو آنے میں بہت دیر لگی
قبر اصغر کی ۔۔۔

شہ نے ہر لاش کو جلدی سے اُٹھایا لیکن
لاش اکبر کی اُٹھانے میں بہت دیر لگی
قبر اصغر کی ۔۔۔

ٹکڑے چُنتے ہوئے قاسم کے کہا مولا نے
ہائے افسوس کہ آنے میں بہت دیرلگی
قبر اصغر کی ۔۔۔

ہاں اس قدر پیاس سے سوکھا تھا گُلِ سرور
شمر کو تیغ چلانے میں بہت دیر لگی
قبر اصغر کی ۔۔۔

کربلا جا کے تکلم نے یہ ہی پوچھا تھا
مجھ کو سرکار بلانے میں بہت دیر لگی
قبر اصغر کی ۔۔۔


qabr asghar ki banane may bahot dayr lagi
sheh ko ek chand chupane may bahot dayr lagi

kuch qadam door hai bazaar se darbar magar
phir bhi shehzadi ko aane may bahot dayr lagi
qabr asghar ki....

sheh ne har laash ko jaldi se uthaya lekin
laash akbar ki uthane may bahot dayr lagi
qabr asghar ki....

tukde chunte hue qasim ke kaha maula ne
haaye afsos ke aane may bahot dayr lagi
qabr asghar ki....

haa is qadar pyas se sookha tha guluay sarwar
shimr ko taygh chalane may bahot dayr lagi
qabr asghar ki....

karbala jaake takallum ne yehi poocha  tha
mujko sarkar bulane may bahot dayr lagi
qabr asghar ki....
Noha - Qabr Asghar Ki
Shayar: Mir Takallum
Nohaqan: Mir Hassan Mir
Download Mp3
Listen Online