پرچمِ عباس، پرچمِ عباس

ہا یہی پرچم حسینی فوج کا بن کر نشاں
جس گھڑی پہنچا تھا فوجِ اشقیائ کے درمیاں
ہر طرف سے آ رہی تھی بس صدائے الاماں
نعرئہ عباس تھا اور تھی فرشتوں کی زباں
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

اس علم کے ساتھ ہے جو ساتھ مشکیزہ بندھا
بازوئے عباس پر جیسے ہو تعویذِ وفا
نہ علم اس سے جدا ہے نہ علم سے یہ جدا
اس علم پہ سایہ افگن ہے دُعائے سیدہ
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

ہا یہی پرچم علی کے ہاتھ میں ہر جنگ میں
کربلا پہنچا دُعائے سیدہ کے رنگ میں
ہے اسی پرچم کو گاڑا تھا علی نے سنگ میں
دوڑتا ہے خون اسکو دیکھ کر رنگ رنگ میں
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

ہا اسی پرچم سے آیا کربلا میں انقلاب
لے کے اسکو جب گیا دریا پہ ابنِ بو تراب
چوم لی موجوں نے بڑھ کر آس پہ غازی کی رقاب
اس کے پنجے کی چمک سے روشنی لے آفتاب
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

جب تلک اونچا رہا کربلا میں غازی کا علم
آ سکے نہ خیمہِ سرور میں اعدا کے قدم
یہ علم ٹھندا ہوا رونے لگے شاہِ اُمم
رو کے کہتے تھے یہی تھا میرے لشکر کا بھرم
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

یہ علم ڈھارس تھا زینب اور سکینہ کے لیے
دھوپ میں اک چھائوں تھا یہ شاہِ والا کے لیے
اس کا گِرنا موت سے بڑھ کر تھاآقا کے لیے
موت کا پیغام یہ پرچم تھا اعدا کے لیے
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

آج ہر گھر پر علم ہے میرے غازی کا سجا
حضرتِ زینب کی پوری ہو گئی آ خر دُعا
مرحبا عباسِ غازی مرحبا صد مرحبا
آسماں تو جھک گیا تیرا علم اونچا رہا
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

اس علم کی شان تو اُس روز دیکھے گا جہاں
آئے گا جس روز اس پرچم کا وارث بارہواں
کفر کی بستی پہ ٹوٹیں گی ہزاروں بجلیاں
مومنوں کے سر پہ ہو گا اس علم کا سائباں
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔

یہ علم اب تک حسینی فوج کی ہے یادگار
حشر تک قائم رہے گا اعتبار و اختیار
دیکھیں گے ریحان اس پرچم کی سب اُس دن بہار
اسکو لے کر آئیں گے جب مہدیِ عالی وقار
پرچم عباس کا۔۔۔۔۔


parchame abbas, parchame abbas

haa yehi parcham hussaini fauj ka bankar nishan
jis ghadi pahuncha tha fauje ashkiya ke darmiyan
har taraf se aa rahi thi bas sadaaye al-amaan
narae abbas tha aur thi farishto ki zuban
parcham abbas ka....

is alam ke saath hai jo saath mashqeeza bandha
baazue abbas par jaise ho taaweeze wafa
na alam is-se juda hai na alam se ye juda
is alam pe saaya afgan hai dua-e-sayyeda
parcham abbas ka....

haa yahi parcham ali ke haath may har jung may
karbala pahuncha duae-sayyeda ke rang may
ha isi parcham ko gaada tha ali ne sang may
daudta hai khoon isko dekhe kar rang rang me.
parcham abbas ka....

haa isi parcham se aaya karbala me inqilaab
leke isko jab gaya darya pe ibne bu-turaab
choomli mauj-on ne badkar aspe ghazi ki raka
iske panje ki chamak se roshni le aaftaab
parcham abbas ka....        

jab talak uncha raha karbal may ghazi ka alam
aa-sake na qaima-e-sarwar may aada ke qadam
ye alam thanda huva rone lage shahe-umam
roke kehte thay yahi tha mere lashkar ka bharam
parcham abbas ka....

ye alam dhaaras tha zainab aur sakina ke liye
dhoop may ek chaaon tha ye shaahe waala ke liye
iska girna maut se badkar tha aakha ke liye
maut ka paighaam ye parcham tha aada ke liye
parcham abbas ka....

aaj har ghar par alam hai mere ghazi ka saja
hazrat-e-zainab ki poori hogayi aakhir dua
marhaba abbas-e-ghazi marhaba sad marhaba
aasman to jhuk gaya tera alam uncha raha
parcham abbas ka....

is alam ki shaan to us roz dekhega jahaan
aayega jis roz is parcham ka waaris baarwaan
kufr ki basti pe tootegi hazaaro bijliyaan
momino ke sar pe hoga is alam ke saayiba
parcham abbas ka....

ye alam ab tak hussaini fauj ki hai yaadgaar
hashr tak qaayam rahega aetebaro ikhtiyaar
dekhenge rehaan is parcham ki sab us din bahaar
isko lekar aayenge jab mehdi-e-aali viqaar
parcham abbas ka....
Noha - Parcham Abbas Ka
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online