ننھے مجاہد رن میں جا کر تم نہیں آئے
شاہ تو آئے جان مادر تم نہیں آئے

کب سے کھڑی ہوں خیمے کے در پر
آنکھوں میں لے کر اشکوں کے ساگر
پیش کروں آجائو اصغر
تم نہیں آئے

خالی جو پہلو پائوں گی بیٹا
غم سے پھٹے گا میرا کلیجہ
رات بھی گذری رو رو کر
تم نہیں آئے

رات اندھیری دشت بیاباں
ڈر نہیں جانا رن میں میری جاں
کیسے رہو گے ماں سے بچھڑ کر
تم نہیں آئے

تم نے اشاروں میں یہ کہا تھا
دے دے رضا مقتل کی خدارا
کر کے فتح میں آئوں گا لشکر
تم نہیں آئے

کب سے ہوئے خیموں سے سدھارے
پیش نظر ہیں سارے نظارے
کھو گئے کیا میدان میں جا کر
تم نہیں آئے

تیر لگا ہے کیا گردن پر
جو نہیں دیکھا ماں کو پلٹ کر
کون سی مجبوری تھی اصغر
تم نہیں آئے

قتل ہوئے جو جور و جفا سے
ساتھ اٹھا کر لائے وہ لاشے
آتے ہیں تنہا رن سے سرور
تم نہیں آئے

کس کو سنائوں گی میں کہانی
یہ بھی نہ سوچا یوسف ثانی
ماں سے کٹے گی رات یہ کیونکر
تم نہیں آئے

کس نے انیس غم کو پکارا
سنوائو آواز دوبارہ
نوحہ یہی تھا بانو کے لب پر
تم نہیں آئے


nanhe mujahid ran may jaakar tum nahi aaye
shaah to aaye jaane maadar tum nahi aaye
nanhe mujahid....

kab se khadi hoo qaime ke dar par
aakhon may lekar ashko ke saagar
pesh karoo aajao asghar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

khaali jo pehlu paaungi beta
gham se phatega mera kaleja
raat bhi guzregi ro ro kar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

raat andheri dasht biyaabaa
dar nahi jaana ran may meri jaan
kaise rahoge maa se bichad kar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

tum ne ishaaro may ye kahaa tha
de de raza maqtal ki khudaara
kar ke fatah mai aaunga lashkar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

kab se huwe qaimo se sidhaare
peshe nazar hai saare nazaare
khogaye kya maidan may jaakar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

teer laga hai kya gardan par
jo nahi dekha maa ko palat kar
kaun si majburi thi asghar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

qatl huwe jo joro jafa se
shaah utha kar laaye wo laashe
aate hai tanha ran se sarwar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

kisko suna-ungi mai kahaani
ye bhi na solha yusufe saani
maa se kategi raat ye kyon kar, tum nahi aaye
nanhe mujahid....

kisne anise gham ko pukaara
sunwaao aawaz dubaara
nowha yehi tha baano ke lab par, tum nahi aaye
nanhe mujahid....
Noha - Nanhe Mujahid Ran May
Shayar: Anees
Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online