نیزوں میں شبابِ علی اکبر نظر آیا
اُلجھا ہوا خاروں میں گُلِ تر نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔

یوں روئے حرم یادِ شہیدانِ وفا میں
ہر آنکھ میں اشکوں کا سمندر نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔

عباس چلے نہر پہ بچوں کی بندھی آس
ہر ہاتھ میں اُمید کا ساغر نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔

جب شمر چلا چھوڑ کے شبیر کا لاشہ
اک ہاتھ میں سر اک میں خنجر نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔

سوتے میں بھی ہا تاب نہیں لاتی تھی جب بانو
کیا خواب میں گہوارئہ اصغر نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔

پانی شہہِ مظلوم ابھی مانگ رہے تھے
ہاتھوں پہ تڑپتا علی اصغر نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔

کیا حال ہوا ہو گا ستمدیدہ بہن کا
جب طشتِ تلہ میں سرِ سرور نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔

سمجھوں گا نثار آنکھوں نے دیکھا درِ جنت
قسمت سے اگر روضئہ سرور نظر آیا
نیزوں میں ۔۔۔۔۔


naizo may shababe ali akbar nazar aaya
uljha hua khaaro may gule tar nazar aaya
naizo may....

yun roye haram yaade shaheedane wafa may
har aankh may ashkon ka samandar nazar aaya
naizo may....

abbas chale nehr pe bachon ki bandhi aas
har haath may umeed ka saagar nazar aaya
naizo may....

jab shimr chala chod ke shabbir ka laasha
ek haath may sar ek may khanjar nazar aaya
naizo may....

sote may bhi ha taab nahi laati thi jab bano
kya khaab may gehwara-e-asghar nazar aaya
naizo may....

paani shehe mazloom abhi maang rahe thay
haaton pe tadapta ali asghar nazar aaya
naizo may....

kya haal hua hoga sitamdeeda behan ka
jab tashte tila may sare sarwar nazar aaya
naizo may....

samjhunga nisaar aankhon ne dekha dare jannat
kismat se agar rauza-e-sarwar nazar aaya
naizo may....
Noha - Naizo May Shababe
Shayar: Nisaar
Nohaqan: Mirza Sikander Ali
Download Mp3
Listen Online