کربلا میں کسی گھر کو اُجڑتا نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے کے ایسا نہیں دیکھا

اصغر تیری مادر پہ تیرا صدمہ ہے کیسا
اُس کو کبھی سائے سے گزرتا نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔

صورت تو دیکھا جائو کے بے چین ہے مادر
ارمان تھا ماں نے تیرا سہرا نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔

گر گر کے سنبھلتی رہی بازاروں میں زینب
پہلے کبھی بازار کا رستہ نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔

یوں تو لیلیٰ دُنیا میں کئی بار مجاہد
ہنستے ہوئے کوئی بچے کو لڑتا نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔

عباس تیرے بعد یوں روتی تھی سکینہ
آنسو جو گرے اُس کے تو تھمتا نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔

عباس نے بے چادری زینب کی جو دیکھی
نیزے پہ سرِ غازی سنبھلتا نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔

سب قتل ہوئے تنہا ہیں سیدِ سجاد
ایسا سپہ سالار زمانے نے نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔

شبیر تیرے سجدے سے زندہ ہیں نمازیں
تیروں پہ کبھی ایسا مسلہ نہیں دیکھا
تاریخ نے مانا ہے ۔۔۔۔۔


karbal may kisi ghar ko ujadta nahi dekha
tareekh ne maana hai ke aisa nahi dekha

asghar teri maadar pe tera sadma hai kaisa
us ko kabhi saaye se guzarta nahi dekha
tareekh ne maana hai....

surat to dikha jao ke bechain hai maadar
armaan tha maa ne tere sehra nahi dekha
tareekh ne maana hai....

gir gir ke sambhalti rahi bazaaron may zainab
pehle kabhi bazaar ka rasta nahi dekha
tareekh ne maana hai....

yun to laila dunya may kayi baar mujahid
haste hue koi bache ko ladta nahi dekha
tareekh ne maana hai....

abbas tere baad yun roti thi sakina
aansu jo giray uske to tham-ta nahi dekha
tareekh ne maana hai....

abbas ne be-chadari zainab ki jo dekhi
naize pe sare ghazi sambhalta nahi dekha
tareekh ne maana hai....

sab qatl hue tanha hai ab sayyede sajjad
aisa sipay salaar zamane ne nahi dekha
tareekh ne maana hai....

shabbir tere sajde se zinda hai namazein
teeron pe kabhi aisa musalla nahi dekha
tareekh ne maana hai....
Noha - Nahi Dekha
Shayar: Syed Qasid Abbas
Nohaqan: Syed Rashid Abbas
Download Mp3
Listen Online