نفرتوں کی دھُول سے چہرہ ہٹا دیکھے گا کون
ہم ہیں مثلِ آئینہ ہم کو بھلا دیکھے گا کون

کربلا سے آج تک آلِ رسولِ پاک پر
جو پسِ پردہ نہیں ہے کربلا دیکھے گا کون
نفرتوں کی دھُول سے ۔۔۔

غُربتیں تو دیکھتے ہیں سب گُلوں سے ہار کے
وہ جو ان کے درمیاں ہے فاصلہ دیکھے گا کون
نفرتوں کی دھُول سے ۔۔۔

اب نہ قاسم ہیں نہ اکبر ہیں نہ عباسِ جری
دُخترِ شیرِ خُدا کا حوصلہ دیکھے گا کون
نفرتوں کی دھُول سے۔۔۔

چل بسی بالی سکینہ اے علمدارِ حُسین
اب درِ زنداں پہ تیرا راستہ دیکھے گا کون
نفرتوں کی دھُول سے ۔۔۔


nafraton ki dhool se chehra hata dekhega kaun
hum hai misle aaina humko bhala dekhega kaun

karbala se aaj tak aale rasool e paak par
jo paki parda nahi hai karbala dekhega kaun  
nafraton ki dhool se....

ghurbate to dekhte hai sab gulon se haariki  
wo jo inke darmiyan hai faasla dekhega kaun
nafraton ki dhool se....

ab na qasim hai na akbar hai na abbas e jari
dukhtare shere khuda ka hausla dekhega kaun
nafraton ki dhool se....

chal basi bali sakina ay alamdare hussain
ab dare zindan pe tera raasta dekhega kaun
nafraton ki dhool se....
Noha - Nafraton Ki Dhool Se

Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online