نہ علم نہ چچا نہ شاہِ کربلا، شام ہو گئی
جو بھی گھر سے گیا وہ نہ پھر آ سکا،شام ہو گئی

راہ تکتی رہی شدتِ پیاس میں،
کٹ گیا دن اسی آ س ہی آس میں
کوئی آیا نہیں جانے کیا ہو گیا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

پانی لینے گئے دیر کتنی ہو گئی،
دن ڈھلا اے چچا شامِ غم آ گئی
خشک ہے اے چچا میرا اب تک گلا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

کس کو آواز دوں ہُک کے میدان میں،
کون ہے جو سُنے اس بیابان میں
دے رہی ہوں تمہیں جانے کب سے صدا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

لوٹ آئو کے پانی نہیں چاہیئے ،
کھائو مجھ پر ترس اب خدا کے لیے
مشک خالی ہی لے آئو اب تو چچا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

جا کے میدان میں بابا بھی آئے نہیں ،
اب تو جھولے میں اصغر بھی ہائے نہیں
خیمہ جلتا ہے یوں جیسے کوئی دیا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

رو رہی ہے پھوپھی چھِن گئی ہے ردا،
مارتے ہیں تماچے مجھے اشقیائ
خیمہ جلتا ہے یوں جیسے کوئی دیا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

بازوئوں میں رسن باندھنے آ گئے،
کھینچ کے لے گئے دُر میرے کان سے
ہو گیا خون سے تر سارا کُرتا میرا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

لو چچا سُوئے زندان چلی غمزدہ،
الوداع الوداع اے قتیلِ جفا
لیجیئے آپ سے ہو رہی ہوں جُدا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔

نوحہ ریحان مجلس میں سُن کے تیرا،
چشمِ گریاں کو یہ ہوش کب ہی رہا
کب سحر ہو گئی اور کب دن ڈھلا، شام ہو گئی
نہ علم نہ چچا ۔۔۔۔۔


na alam na chacha na shah-e-karbala, shaam hogayi
jo bhi ghar se gaya wo na phir aa saka, shaam hogayi

raah takti rahi shiddate pyas may,
kat gaya din isi aas hi aas may
koi aaya nahi jaane kya hogaya, shaam hogayi
na alam na chacha....

pani lene gaye dayr kitni hogayi,
din dhala ay chacha shaam-e-gham aagayi
khushk hai ay chacha mera ab tak gala, shaam hogayi
na alam na chacha....

kisko aawaaz doo huk ke maidaan may,
kaun hai jo sune is biyabaan may
de rahi hoo tumhein jaane kabse sada, shaam hogayi
na alam na chacha....

laut aao ke paani nahi chahiye,
khao mujpar taras ab khuda ke liye
mashk khaali hi le-aao ab to chacha, shaam hogayi
na alam na chacha....

jaake maidaan may baba bhi aaye nahi,
ab to jhoole may asghar bhi haaye nahi
qaima jalta hai yu jaise koi diya, shaam hogayi
na alam na chacha....

ro rahi hai phuphi chin gayi hai rida,
maarte hai tamaache mujhe ashkiyaa
qaima jalta hai yu jaise koi diya, shaam hogayi
na alam na chacha....

baazuon may rasan baandhne aagaye,
khainchke legaye dur mere kaan se
hogaya khoon se tar saara kurta mera, shaam hogayi
na alam na chacha....

lo chacha suve zindaan chali ghamzada,
alvida alvida  ay qateel-e-jafa        
lijiye aapse ho rahi hoo juda, shaam hogayi
na alam na chacha....

nowha rehaan majlis may sunke tera,
chasme giriyaan ko ye hosh kab hi raha
kab sahar hogayi aur kab dhin dala, shaam hogayi
na alam na chacha....
Noha - Na Alam Na Chacha
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Nasir Zaidi
Download Mp3
Listen Online