میت خدا کے شیر کی سوئے نجف چلی
ہر سمت ایک شور ہے مولا علی علی
میت خدا کے شیر

شہزادے شہزادیاں بابا کو روتے ہیں
حق کے ولی کو خلق کے مولا کو روتے ہیں
زہرا کے گھر میں کیسی مصیبت یہ آگئی
میت خدا کے شیر

دیوار و در ہے نوحہ کنا شہہ سوگوار
سر کو پٹختے جاتے ہیں مولا کے سوگوار
اک تیغ زہر بار میں دنیا اجاڑی
میت خدا کے شیر

مظلومیت کا حق کا مددگار مر گیا
بیوائوں کا یتیموں کا غمخوار مر گیا
مشکل کشائ جدا ہوا مشکل یہ آگئی
میت خدا کے شیر

زینب کی نظری بابا کو پائیں گی اب کہاں
کلثوم روتی جاتی ہے لے لے کے ہچکیاں
بابا کی یاد آتی ہے ہر وقت ہر گھڑی
میت خدا کے شیر

نوسو رہواروں مہر ولایت نے شام کی
میت اٹھائو کاندھوں پہ زخمی امام کی
کہتے چلو یہاں سے نجف تک علی علی
میت خدا کے شیر


mayyat khuda ke sher ki suye najaf chali
har samt ek shor hai maula ali ali
mayyat khuda ke....

shahzade shahzadiya baba ko rote hai
haq ke wali ko khalq ke maula ko rote hai
zehra ke ghar may kaisi musibat ye aagayi
mayyat khuda ke....

deewaro dar hai nowhakuna shehr soghwaar
sar ko patakte jaate hai maula ke jaanisar
ek tayghe zehr baar ne dunya ujaad di
mayyat khuda ke....

mazloomiyat ka haq ka madadgar mar gaya
bewaon ka yateemo ka ghamkhar mar gaya
mushkil kusha juda hua mushkil ye aagayi
mayyat khuda ke....

zainab ki nazrein baba ko paayengi ab kahan
kulsoom roti jaati hai le le ke hichkiyan
baba ki yaad aati hai har waqt har ghadi
mayyat khuda ke....

nauso rehwaro mehre wilayat ne shaam ki
mayyat uthao kaandho par zakhmi imam ki
kehte chalo yahan se najaf tak ali ali
mayyat khuda ke....
Noha - Mayyat Khuda Ke Sher

Nohaqan: Ali Zia Rizvi
Download Mp3
Listen Online