لُٹ گیا آپ کا گھر آپ کہاں تھے بابا
کٹ گیا شاہ کا سر آپ کہاں تھے بابا

باپ سے شامِ غریباں یہ کہا زینب نے
مل گیا خاک میں گھر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

تیر اصغر کے لگا برچھی علی اکبر کے
بچھڑے سب نورِ نظر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

میرے بھیا نے اُٹھائے ہیں سحر سے لاشے
جھُک گئی شہہ کی کمر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

لاش فرزند کی سرور نے اُٹھائی کیسے
اُجڑی آغوشِ پسر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

شاہ گرتے تھے تنابوں میں اُلجھ کر ہر سُو
سُن کے آوازِ پسر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

جب میرے بھائی کے سینے پہ چڑھا تھا قاتل
اماں آئی تھی آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

جب چھِنی میری ردا ڈھونڈ رہی تھی ہر سُو
آپ کو میری نظر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

آگ دامن سے سکینہ کے بجھائی میں نے
جل گئے خیمے ادھر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

پہرا میں اُجڑی بہاروں کا دیئے جاتی ہوں
چھُپ گئے شمس و قمر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔

بیٹی حیدر کی تھی مصروفِ شکایت انور
مل گیا خاک میں گھر آپ کہاں تھے بابا
لُٹ گیا آپ کا گھر ۔۔۔۔۔


lutgaya aap ka ghar aap kahan thay baba
katgaya shaah ka sar aap kahan thay baba

baap se sham e ghariban ye kaha zainab ne
milgaya khaak may ghar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

teer asghar ke laga barchi ali akbar ke
bichde sab noor e nazar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

mere bhaiya ne uthaye hai sehar se laashe
jhuk gayi sheh ki kamar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

laash farzand ki sarwar ne uthayi kaise
ujdi aagosh e pisar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

shaah girtay thay tanabo may ulajh kar har soo
sunke awaaz e pisar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

jab mere bhai ke seene pa chada tha qaatil
amma aayi thi magar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

jab chini meri rida dhoond rahi thi har soo
aap ko meri nazar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

aag daaman se sakina ke bujhayi maine
jalgaye qaimay idhar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

pehra mai ujhdi baharon ka diye jaati hoo
chip gaye shams o qamar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...

beti hyder ki thi masroof e shikayat anwar
milgaya khaak may ghar aap kahan thay baba
lutgaya aap ka ghar...
Noha - Lutgaya Aap Ka Ghar
Shayar: Anwar Zahir, Anwar Meeruti
Nohaqan: Shareef Hussain(Lillay)
Download Mp3
Listen Online