لو مل گئی زنداں سے سکینہ کو رہائی
سجاد نے یہ کہتے ہوئے لاش اُٹھائی
لو مل گئی۔۔۔

بابا چلے آئو کے میں تنہا ہوں یہاں پر
بس اتنا بتاجائو کہ دفنائوں کہاں پر
کیا قید میں ہی دفن کرے بہن کو بھائی
لو مل گئی۔۔۔

گھر جانے کی حسرت تو بر آور نہ ہوئی پر
دم ٹوٹ گیا ہوگئی آزاد تو دختر
ماں بیٹی کا سر چوم کے دیتی تھی دُہائی
لو مل گئی۔۔۔

اب شمر تماچے نہ اسے مار سکے گا
آرام سے سوئے گی تہہ خاک یہ دکھیا
لاشے سے یہی کہتی رہی فاطمہ جائی
لو مل گئی۔۔۔

بھائی نے زمیں کھود کے جب قبر سنواری
روتے ہوئے میت سوئے تربت جو اُتاری
زندان کی دیواروں سے آواز یہ آئی
لو مل گئی۔۔۔

بند آنکھیںکیے قبر میں آرام کرے گی
ماںشانا ہلاتی رہے پھر بھی نہ اُٹھے گی
یوں موت نے لوری ہے سکینہ کو سنائی
لو مل گئی۔۔۔

عابد پہ تکلم وہ مصیبت کی گھڑی تھی
جن ہاتھوں میں کھیلی تھی وہ معصوم سی بچی
اُن ہاتھوں نے تربت بھی سکینہ کی بنائی
لو مل گئی۔۔۔


lo mil gayi zindan se sakina ko rehaai
sajjad ne ye kehte hue laash uthaayi
lo mil gayi....

baba chale aao ke mai tanha hoon yahan par
bas itna bata jao ke dafnaun kahan par
kya qaid may hi dafn kare behn ko bhai
lo mil gayi....

ghar jaane ki hasrat o barabar na hui par
dam tooth gaya hogayi azad tu dukhtar
maa beti ka choom ke deti thi duhaai
lo mil gayi....

ab shimr tamache na ise maar sakega
aaram se soyegi tahe khaakh ye dukhiya
laashe se yehi kehti rahi fatima jaayi
lo mil gayi....

bhai ne zameen khod ke jab khabr sawari
rote hue mayyat samyat turbat jo utaari
zindan ki dewaaro se awaaz ye aayi
lo mil gayi....

ban dan ke kiye khabr may aaraam karegi
maa shaana hilati rahe phir bhi na uthegi
yun maut ne lori hai sakina ko sunaai
lo mil gayi....

abid pe takallum wo musibat ki ghadi thi
jin haaton may kheli thi wo masoon si bachi
un haaton ne turbat bhi sakina ki banayi
lo mil gayi....
Noha - Lo Mil Gayi Zindan Se
Shayar: Mir Takallum
Nohaqan: Mir Hassan Mir
Download Mp3
Listen Online