کیا ڈھونڈ رہی ہے جنگل میں سکینہ
عباس کے بازو یا بابا کا سینہ

کانوں سے چھِنے گوہر اور آگ تھی دامن میں
گھبرائی ہوئی بچی یہ کہتی رہی رن میں
ہے کوئی جو مجھ کو پہنچا دے مدینہ
کیا ڈھونڈ رہی ۔۔۔۔۔

رن سے علی اصغر کو لے آئو میرے بابا
سُونا نظر آتا ہے بھائی کا میرے جھولا
اصغر کے بغیر اب مجھ کو نہیں جینا
کیا ڈھونڈ رہی ۔۔۔۔۔

یہ شام کے زنداں میں دیواروں کو تکتی ہے
کیا سوچ کے یہ جانے دن رات سسکتی ہے
بچھڑی ہے چچا سے جب سے یہ حزینہ
کیا ڈھونڈ رہی ۔۔۔۔۔

دُنیا سے سدھارے ہیں بھائی جو میرے پیاسے
جب تک نہیں لوٹے گے عموں میرے دریا سے
میں نے اے پھوپھی جان پانی نہیں پینا
کیا ڈھونڈ رہی ۔۔۔۔۔

پہنچے جو شاہِ والا بیٹے کی صدا سُن کر
دیکھا کے رگڑتے ہیں ایڑھی کو جواں اکبر
نیزے کی اَنی ہے اور بیٹے کا سینہ
کیا ڈھونڈ رہی ۔۔۔۔۔

احمد کے نواسے کو مارا ہے محرم میں
چالیس برس روئے سجاد اسی غم میں
تاریخ پُکاری ہے غم کا مہینہ
کیا ڈھونڈ رہی ۔۔۔۔۔

ہونگے سرِ محشر بھی اونچے یوں ہی سر اپنے
مرقد کو اُجالوں سے بھر دینگے ظفر اپنے
رکھتے ہیں لحد میں ہم اشکوں کا خزینہ
کیا ڈھونڈ رہی ۔۔۔۔۔


kya dhoond rahi hai jangal may sakina
abbas ke baazu ya baba ka seena

kano se chine gowhar aur aag thi daman may
ghabrayi hui bachi ye kehti rahi ran may
hai koi jo mujhko pahunchade madina
kya dhoond rahi....

ran se ali asghar ko le aao mere baba
soona nazar aata hai bhai ka mere jhoola
asghar ke baghair ab mujhko nahi jeena
kya dhoond rahi....

ye shaam ke zindan may deewaron ko takti hai
kya soch ke ye jaane din raat sisakti hai
bichdi hai chacha se jab se ye hazeena
kya dhoond rahi....

dunya se sidhare hai bhai jo mere pyase
jab tak nahi lautenge ammu mere darya se
maine ay phupi jaan pani nahi peena
kya dhoond rahi....

pahunche jo shahe wala bete ki sada sunkar
dekha ke ragadte hai aydi ko jawan akbar
naize ki ani hai aur bete ka seena
kya dhoond rahi....

ahmed ke nawase ko maara hai moharram may
chalees baras roye sajjad isi gham may
tareekh pukari hai gham ka mahina
kya dhoond rahi....

honge sare mehshar bhi unchay yuhin sar apne
markhad ko ujalon se bhar denge zafar apne
rakhte hai lehad may hum ashkon ka khazeena
kya dhoond rahi....
Noha - Kya Dhoond Rahi
Shayar: Zafar
Nohaqan: Mirza Sikander Ali
Download Mp3
Listen Online