کوفے کا اور شام کا منظر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا اور شام کا منظر

قبر پہ شبیر کی کرتے تھے عابد بکا
ہوگئی کیا کیا جفا ، سنیئے شہہ کربلا
سر پہ کسی کے نہ تھی چادر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

ایک رسن میں بندھے چھوٹے بڑوں کے گلے
برسرِ دربار سب اس طرح لائے گئے
کوٹھوں سے برساتے تھے پتھر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

کوفے کے بازار میں مجمعِ کفّار میں
ایک تماشہ سا تھا ،آلِ ستم گار میں
ایسے میں ماں بہنیںکھولے سر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

طوق سے ہرگز نہ تھا بابا میرا سر جھکا
ہتھکڑی اور بیڑی کا کوئی مجھے غم نہ تھا
ارے دیکھا نہیں جاتا تھا منظر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

ارے بالی سکینہ کا غم دل یہ نہیںبھولتا
سب کے تھے شانے بندھے میرا بندھا تھا گلہ
ارے درد سے وہ رہتی تھی مضطر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

میری پھپی جان تھی بلوے میں جو سر کھلے
نیزے سے عمّوں میرے فرش پہ گر پڑتے تھے
ہائے چچا جان کا سفر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

لے کے گئے جب ہمیں بزمِ ستم گارمیں
سات سو کُرسی نشیں بیٹھے تھے دربار میں
تخت پہ بیٹھاتھا ستمگر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

جب کیا سجاد سے آکے کسی نے سوال
گزراکہاں پر امام آپکو زیادہ ملال
ارے کہتے تھے اشّام مقرّر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔

مقتل و تاریخ بھی کرنہ سکے حق ادا
لکھے انیس ِ حزیں گریہ عابد کو کیا
ارے کہتے تھے یہ عابدِ مضطر
یاد جب آجاتا ہے بابا
دل میرا پھٹ جاتا ہے بابا
کوفے کا ۔۔۔


kufe ka aur shaam ka manzar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka aur shaam ka manzar

qabr pe shabbir ki karte thay abid buka
hogayi kya kya jafa, suniye shahe karbala
sar pe kisi ke na thi chadar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

ek rasan may baandhe chote bado ke galay
barsare darbar sab is tarha laaye gaye
kotho se barsaatay thay pathar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

kufe ke baazar may majma-e kuffaar may
ek tamasha sa tha, aale sitam gaar may
aise may maa behne khule sar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

tauq se hargis na tha baba mera sar jhuka
hathkadi aur bedi ka koi mujhe gham na tha
arey dekha nahi jata tha manzar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

arey bali sakina ka gham dil ye nahi bhool tha
sab ke the shaane bandhe uska bandha tha gala
arey dard se wo roti thi mustar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

meri phuphi jaan thi balwe may jo sar khulay
naize se ammu mere farsh pe gir padte thay
haaye chacha jaan ka safar
yaad jab aajata hai baba,
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

leke gaye jab hamay bazm-e-sitamgaar may
saat-sau kursi nasheen baithe thay darbaar may
thakht pe baitha tha sitamgar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

jab kiya sajjad se aake kisis ne sawaal
guzra kahan par imam aap ko zyaada malaal
arey kehte thay as-shaam muqarrar
yaad jab aajata hai baba
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....

maqtalo tareekh bhi kar na sake hakh adaa
likhay aneesay hazeen girya-e abid ko kya
kehte thay ye abid-e muztar
yaad jab aajata hai baba,
dil mera phat jaata hai baba
kufe ka.....
Noha - Kufe Ka Aur Sham
Shayar: Anees
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online