کبریٰ نے کہا قاسم دولہا
کس سُونے بن میں سوتے ہو
بچپن کا رنڈھاپا دیکھو ذرا
کس سُونے بن میں سوتے ہو

سہرا ہے کہیں کنگنا ہے کہیں
مسند کے ایوز ہے خاک نشیں
ہے رانڈ بنی معبوثِ جفا
کس سُونے بن ۔۔۔

شادی کا نیا قلات یہ ملا
ہے سر پہ میرے اک کالی ردا
دیکھو تو دولہن کا حال ذرا
کس سُونے بن ۔۔۔

پازیب کی جا بیڑی ہے پڑی
کنگنے کے ایوز رسی ہے بندھی
کیا خوب بنی کیا حال بنا
کس سُونے بن ۔۔۔

تھاما تھا جوتم نے ہاتھ میرا
دینا تھا لحد تک ساتھ میرا
مجھ رانڈ بنی سے ہو کے خفا
کس سُونے بن ۔۔۔

مظلوم بنے بے یار بنے
مرتے ہیں بنی غمخوار بنے
بتلائو تو اپنا حال ذرا
کس سُونے بن ۔۔۔

ماتم میں گریباں پھاڑوں گی
بالوں سے لحد کو جھاڑوں گی
لِلّہ مجھے دو اپنا پتہ
کس سُونے بن ۔۔۔

ہو جاتا تھا شوکت حشر بپا
ہِل جاتا تھا دشتِ کرب و بلا
کہتی تھی جو رو رو کر دپکھیا
کس سُونے بن ۔۔۔


kubra ne kaha qasim dulha
kis sonay ban may sotay ho
bachpan ka randhapa dekho zara
kis sonay ban may sotay ho

sehra hai kahin kangna hai kahin
masnad ke aywaz hai  khaak nasheen
hai raand bani mahboose jafa
kis sonay ban....

shaadi ka naya qillat ye mila
hai sar pe mere ek kaali rida
dekho to dulhan ka haal zara
kis sonay ban....

paazeb ki jaa bedi hai padi
kangne ke aywaz rassi hai bandhi
kya khoob banee kya haal bana
kis sonay ban....

thaama tha jo tumne haat mera
dena tha lahad tak saat mera
mujh raand banee se hoke khafa
kis sonay ban....

mazloom banay be yaar banay
martee hai banee ghamkhar banay
batlao to apna haal zara
kis sonay ban....

matam may gireban phadungi
baalon se lahad ko jhadungi
lillaah mujhe do apna pata
kis sonay ban....

hojata tha showkat hashr bapa
hiljata tha dashte karbobala
kahti thi jo ro ro kar dukhiya
kis sonay ban....
Noha - Kubra Ne Kaha

Shayar: Shaukath