کوئی حُسین سا سجدہ بھلا ادا تو کرے
کہ رشک جس پہ صدا خاکِ کربلا تو کرے
کوئی حُسین سا سجدہ ۔۔۔۔۔

شہید کون سا گُزرا ہے پورے عالم میں
سِناں کی نوک پہ جو ذکرِ لا اِلٰہ تو کرے
کوئی حُسین سا سجدہ ۔۔۔۔۔  

لبِ فرا،ت وہ بازو کٹا کے سویا ہے
عباس جیسی جہاں میں کوئی وفا تو کرے
کوئی حُسین سا سجدہ ۔۔۔۔۔

علم کے نیچے جو مانگو قبول ہوتی ہے
خلوصِ دل سے کوئی شخص گر دُعا تو کرے
کوئی حُسین سا سجدہ ۔۔۔۔۔

میں بابا آپ کا بیٹا ہوں گو کہ اصغر ہوں
کہو لعین سے ستم کی وہ انتہا تو کرے
کوئی حُسین سا سجدہ ۔۔۔۔۔

کہاں سے لائو گے ایسا جگر جو دیں کے لیئے
عصر سے پہلے بہتر کو جو جُدا تو کرے
کوئی حُسین سا سجدہ ۔۔۔۔۔

کیا حُسین نے جیسے ہے صبر کربل میں
امیر صبر پہ یوں کوئی اکتفا تو کرے
کوئی حُسین سا سجدہ ۔۔۔۔۔


koi hussain sa sajda bhala ada to kare
ye rashk jispe sada khaake karbala to kare
koi hussain sa sajda....

shaheed kaunsa guzra hai pooray aalam may
sina ki nok pe jo zikre la-ilaah to kare
koi hussain sa sajda....

labe faraat wo bazu kata ke soya hai
abbas jaisi jahaan may koi wafa to kare
koi hussain sa sajda....

alam ke neeche jo maango qabool hoti hai
khuloose dil se koi shaks gar duwa to kare
koi hussain sa sajda....

mai baba aap ka beta hoo go-ke asghar hoo
kaho la-een se sitam ki wo intihaa to kare
koi hussain sa sajda....

kahan se laa-oge aisa jigar jo deen ke liye  
asar se pehle bahattar ko jo judaa to kare
koi hussain sa sajda....

kiya hussain ne jaise hai sabr karbal may
ameer sabr pe yu koi iktifa to kare
koi hussain sa sajda....
Noha - Koi Hussain Sa Sajda
Shayar: Ameer
Nohaqan: Hasan Sadiq
Download Mp3
Listen Online