کوئی ایسا مجاہد تو دیکھا دے
گلے پر تیر کھا کر مسکرا دے

بڑی مشکل ہے کوئی باپ کیسے
جواں بیٹے کو مرنے کی رضا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

چراغِ زندگی بجھتا ہے لیلیٰ
علی اکبر کو دامن کی ہوا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

کہا شبیر نے اے قوتِ دل
جوان لاشے علی اکبر اُٹھا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

رضائے جنگ دے کر شاہ بولے
اجل قاسم کو اب دولہا بنا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

علی اکبر کو ہچکی لگ رہی ہے
کوئی اب تو اسے پانی پلا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

بڑے جلاد ہیں یہ شام والے
بدل سکتے نہیں ان کے ارادے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

سرِ زینب کی چادر چھن چکی ہے
غبارِ خاک اُٹھ چہرا چھپا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

لگی ہے آگ بستر جل رہا ہے
کوئی بیمار کا شانہ ہلا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

گزر بازار سے ہے بے کسوں کا
کوئی ان شام والوں کو ہٹا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

بھرے دربار میں جاتی ہے زینب
ذرا اے قوت ِ دل حوصلہ دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

سکینہ سے یتیمی کہہ رہی ہے
چراغِ اشک زندان میں جلا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔

کوئی کانٹوں پہ پیدل چل رہا ہے
ظہیر اب راہ میں آنکھیں بچھا دے
کوئی ایسا مجاہد ۔۔۔۔۔


koi aisa mujahid to dikhade
galay par teer khakar muskurade

badi mushkil hai koi baap kaise
jawan bete ko marne ki riza de
koi aisa mujahid....

charaghe zindagi bujhta hai laila
ali akbar ko daman ki hawa de
koi aisa mujahid....

kaha shabbir ne ay khuwwate dil
jawan laashe ali akbar utha de
koi aisa mujahid....

riza e jang dekar shah bolay
ajal qasim ko ab dulha bana de
koi aisa mujahid....

ali akbar ko hichki lag rahi hai
koi ab to isay pani pilaade
koi aisa mujahid....

bade jallad hai ye sham wale
badal sakte nahi inke iraade
koi aisa mujahid....

sare zainab ki chadar chin chuki hai
ghubare khaak uth chehra chupa de
koi aisa mujahid....

lagi hai aag bistar jal raha hai
koi bemaar ka shana hilaade
koi aisa mujahid....

guzar bazaar se hai bekaso ka
koi in sham walon ko hatade
koi aisa mujahid....

bhare darbar may jaati hai zainab
zara ay khuwwate dil hausla de
koi aisa mujahid....

sakina se yateemi keh rahi hai
charaghe ashk zindan may jala de
koi aisa mujahid....

koi kaaton pe paidal chal raha hai
zaheer ab raah may aankhein bicha de
koi aisa mujahid....
Noha - Koi Aisa Mujahid
Shayar: Zaheer
Nohaqan: Mirza Sikander Ali
Download Mp3
Listen Online