جب لاشہئِ فرزندِ نبی ہوگیا پامال
اُس وقت عجب حال میں تھی فاطمہ کی آل
تاریخ نے کچھ اس طرح لکھا ہے وہ احوال
سب بیبیوں میں ایک تھا بی بی کا بُرا حال
بے چینی سے آتی تھی درِ خیمے پہ ہر بار
بچوں کو سمیٹے ہوئے کہتی تھی د ل ا فگار
اے جری دلیر باوفا بازوئ ِشہیدِکربلا
جانِ فاطمہ و مرتضیٰ تشنہ لب سکینہ کے چچا
کس کو دے صدا زینب فوج اب قریب آئی اے حسین کے بھائی

آپ کو نہیں یہ خبر ،لُٹ گیا ہے فاطمہ کا گھر
سو رہے ہو جا کہ نہر پر ، نیزے پہ رکھا ہے شہہ کا سر
کس کو دے صدا زینب۔۔۔۔

اکبرِ جواں نہیں رہا ،بے زباں بھی قتل ہوگیا
قاسمِ حزیں بھی چل بسا ،خاتمہ ہوا سپاہ کا
کس کو دے صدا زینب۔۔۔۔

کس طرح بتائوں رن کا حال، لاش کو کرینگے پائمال
بھائی کا کرو تو کچھ خیال ، شاہِ لافتہ کے لال
کس کو دے صدا زینب۔۔۔۔

کرتی ہے رُباب یہ فغاں ، ہونے کو ہے رات اب ایاں
رن میں ہے ہمارا بے زباں ، لے کے آئے اُس کو بھائی جاں
کس کو دے صدا زینب۔۔۔۔

خیموں کو جلا نہ دیں لعیں ،لُوٹ لے نہ مال و زر کہیں
کیا کرے گا عابدِ حزیں ،اُس کو تب سے ہوش ہی نہیں
کس کو دے صدا زینب۔۔۔۔

فوجِ شام بانیئِ جفا ،جان کے اکیلا بینوا
کر دے ظلم کی نہ انتہا،چھین لے نہ آکے یہ ردا
کس کو دے صدا زینب۔۔۔۔

کن جفائوں کاہو تذکرہ،شامِ غم میں آلِ مصطفےٰ
ہوگئی غموں میں مبتلا ،لب پہ تھی انیس یہ بکا
کس کو دے صدا زینب۔۔۔۔


jab laashaye farzande nabi ho gaya pamaal
us waqt ajab haal may thi fathima ki aal
tareekh ne kuch is tarha likha hai wo ehwaal
sab bibion may ek tha bibi ka bura haal
bechaini se aati thi dare qaime pe har baar
bachon ko samayte huwe kehti thi dilafgaar
ay jari diler bawafa baazue shaheede karbala
jaane fathima-o-murtuza tashnalab sakina ke chacha
kisko de sada zainab fauj ab qareeb aayi ay hussain ke bhai

aap ko nahi hai ye khabar, lut gaya hai fathima ka ghar
so rahe ho jaake nehr par, naize pe rakha hai sheh ka sar
kisko de sada zainab....

akbar-e-jawaan nahi raha, bezubaan bhi qatl hogaya
qasim-e-hazeen bhi chal basa, qatima hua sipaah ka
kisko de sada zainab....

kis tarha bataun ran ka haal, laash ko karenge paemaal
bhai ka karo to kuch khayaal, shaah-e-lafatah ke laal
kisko de sada zainab....

karti hai rabab ye fughaan, hone ko hai raat ab ayaan
ran may hai hamara bezuban, leke aaye usko bhai jaan
kisko de sada zainab....

qaimo ko jala na de layeen, loot le na maal-o-zar kahin
kya karega abid-e-hazeen, usko tabse hosh hi nahin
kisko de sada zainab....

fauje shaam baaniye jafa, jaan ke akela benawa
karde zulm ki na inteha, cheen le ne aake ye rida
kisko de sada zainab....

kin jafaon ka ho taskira, shaam-e-gham may aale mustufa
hogayi ghamo may mubtila, lab pe thi anees ye buka
kisko de sada zainab....
Noha - Kisko De Sada Zainab
Shayar: Anees
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online