جب کٹ گیا زہرا کا چمن دشتِ بلا میں
شامل ہوا پیاسوں کا لہو خاکِ شفا میں
کوئی نہ رہا فوجِ امامِ د و سرا میں
اور گھِرگیا حیدرکا پسر اہلِ جفا میں
اک خشک گلا اور کہیں وہ نیزہ و خنجر
ارے نو لاکھ کا ریلا و اکیلا وہ دلاور

جب میرا حسین فاطمہ کا چین
پُشت رہوار سے جب خاک پر گرا
خنجر قریب زانوئے قاتل قریب ہے
آج امتحانِ صبرِ حسینِ غریب ہے

جاں سے قریب تر میرے پروردگار دیکھ
عاشق کا اپنی ریگِ تپاں پر کرار دیکھ
میرا یقین دیکھ میرا اعتبار دیکھ
میں کتنا مطمئن ہوں ادھر ایک بار دیکھ
خنجر قریب۔۔۔

پیاسا ہوں تین روز کا زخموں سے چُور ہوں
یارب گواہ رہیو کہ میں بے قصور ہوں
چھ ماہ ہوگئے کہ وطن سے بھی دُور ہوں
اب تیر ی بارگاہ میں تیرے حضور ہوں
خنجر قریب۔۔۔۔

اک قلبِ ناتواں پہ بہتّر کا داغ ہے
اٹھارہ سال کے علی اکبر کا داغ ہے
بازو بُریدہ شیر کا اصغر کا داغ ہے
لگنا ابھی لُٹی ہوئی چادر کا داغ ہے
خنجر قریب۔۔۔۔  

یہ کہہ کو جو خموش ہوئے سبطِ پیمبر
دیکھا کے سرہانے کھڑی ہے مادرِ مضطر
شہزادی کے سر پر ہے پڑی خاک کی چادر
کہتیں ہیں وہ سرگود میں شبیر کا لے کر
خنجر قریب۔۔۔۔

مظلوم کی امداد کو آتا نہیں کوئی
پانی بھی دمِ مرگ پِلاتا نہیں کوئی
زخموں پہ لگی خاک چھڑاتانہیں کوئی
ہئے ہئے میرے بچے کو بچاتا نہیں کوئی
خنجر قریب۔۔۔۔

حیدر سے کہا زہرا نے خوف آتا ہے صاحب
ماں ہوں میرا دل درد سے تھرّاتا ہے صاحب
یہ دیکھیئے دنیا سے پسر جاتا ہے صاحب
خنجر کو لیئے شمر ادھر آتا ہے صاحب
خنجر قریب۔۔۔۔

فرمانے لگے ماں سے بصد رنج یہ مولا
کچھ دیر میں اب کوچ ہے دنیا سے ہمارا
اے اماں چلی جائیے مقتل سے خدارا
کس طرح سے دیکھو گی تڑپتا ہوا لاشہ
خنجر قریب۔۔۔۔

اک بار جو خیموں کی طرف یاس سے دیکھا
دیکھا کے درِ خیمے پہ رُوتی ہے سکینہ
اک ہُوک اُٹھی قلب میں رونے لگے مولا
زینب سے اشاروں سے کہا اے میری بہنا
خنجر قریب۔۔۔۔

آوازِ غیب آئی پلٹ آحسین آ
اب امتحان تیرا مکمل یہاں ہوا
خونِ پسر سے تُو ہے وضو اب تو کر چکا
یہ سُن کے شہہ نے سجدے میں سر رکھ کے یہ کہا
خنجر قریب۔۔۔۔

جب پہنچی بہن بھائی کے لاشے پہ کھلے سر
دیکھا کہ لعیں پھیر چکا حلق پہ خنجر
اور شمر لیئے جاتاہے سر گیسو پکڑ کر
اے سرور و ریحان کرو یاد وہ منظر
خنجر قریب۔۔۔


jab lut gaya zehra ka chaman dashte bala may
aur hua pyaso ka lahoo khake shifa may
koi na raha fauje imame do sara may
aur gir gaya hyder ahle jafa may
ek khushk gala aur kayi wo naiza o khanjar
aray nau laak ka mela aur akela wo dilawar

jab mera hussain fatema ka chain
pushte rahwaar se khaak pe ghira
khanjar khareeb zanu e qaatil khareeb hai
aaj imtehan sabre hussain e ghareeb hai

jaan ke khareeb sar mera parwardigar dekh
aashiq ka apne rayg-e-tapan par qaraar dekh
mera yakeen dekh mera aetbaar dekh
mai kitna mutmain hoo idhar ek baar dekh
khanjar khareeb....

pyasa hoo teen roz ka zakhmo se choor hoo
ya rab gawah rahiyo ke mai bekasur hoo
cheh maah ho gaye ke watan se bhi door hoo
ab teri bargah may tere huzoor hoo
khanjar khareeb....

ek qalb-e-natawan pe bahatar ka daagh hai
athara saal ke ali akbar ka daagh hai
baazu burida sher ka asghar ka daag hai
lagna abhi luti huvi chadar ka daagh hai
khanjar khareeb....

ye keh ke jo khamosh huwe sibte payambar
dekha ke sarhane khadi hai madar-e-muztar
shehzadi ke sar par hai padi khaak ki chadar
kehti hai wo sar godh may shabbir ka lekar
khanjar khareeb....

mazloom ki imdad ko aata nahi koi
pani bhi dame marg pilata nahi koi
zakhmo pe lagi khaak chudata nahi koi
haye haye mere bache ko bachata nahi koi
khanjar khareeb....

hyder se kaha zehra ne khauf ata hai saheb
maa hoo mera dil dard se tharrata hai saheb
ye dekhiye dunya se pisar jaata hai saheb
khanjar ko liye shimr aata hai saheb
khanjar khareeb....

farmane lage maa se basad ranj ye maula
kuch dayr may ab kooch hai dunya se hamara
ay amma chali jaiye maqtal se khudara
kis tarah se dekhogi tadapta hua laasha
khanjar khareeb....

ek baar jo qaimo ki taraf yaas se dekha
dekha ke dare qaima pe roti hai sakina
ek hook uthi qalb may rone lage maula
zainab se isharon se kaha ay meri behna
khanjar khareeb....

awaaze ghaib aayi palat aa hussain aa
ab imtehan tera mukammal yahan hua
khoone pisar se tu hai wuzu ab to kar chuka
ye sun ke sheh ne sajde may sar rakh ke ye kaha
khanjar khareeb....

jab pahunchi behan bhai ke laashe pe khule sar
dekha ke layeen phayr chuka halq pe khanjar
aur shimr liye jata hai sar gaysu pakad kar
ay sarwar o rehan karo yaad wo manzar
khanjar khareeb....
Noha - Khanjar Khareeb
Shayar: Rehaan Azmi
Nohaqan: Nadeem Sarwar
Download Mp3
Listen Online