کہتی تھی یہی جینے سے بیزار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی اکبر سے کے بیمار ہے صغریٰ

لینے کے لیے بھائی کو بھیجا نہیں اب تک
بابا کو خبر دی ہے کے لاچار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

جی بھر کے ابھی دیکھ لو تم چہرئہ اکبر
پھر بھائی سے ملنا بڑا دُشوار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

اکبر سے کہے آئے مجھے لینے کو جلدی
اے بابا سفر کے لیے تیار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

وہ شہرِ مدینہ جہاں اکثر ہیں مسلمان
تنہا شاہِ والا کی اعزادار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

ہر وقت لگی رہتی ہیں دروازے پہ نظرین
اس درد مسلسل میں گرفتار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

کیا آ گئی آواز ِ اذانِ علی اکبر
اس رنج و مصیبت میں گرفتار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

شبیر کا سر کٹ گیا عباس کے بازو
اب زینب و کلثوم ہیں دربار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

اچھا ہی ہوا تم نہ گئی ساتھ سفر میں
ماں بہن ہے اور شام کا بازار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔

صغریٰ سے کہے کو ن ظفر مر گیا وہ بھی
جس اصغرِ ناداں سے تجھے پیار ہے صغریٰ
کہہ دے کوئی ۔۔۔
کہتی تھی ۔۔۔۔۔


kehte thi yahi jeene se bedaar hai sughra
kehde koi akbar se ke bemaar hai sughra

lene ke liye bhai ko bheja nahi ab tak
baba ko khabar di hai ke lachaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

jee bhar ke abhi dekhlo tum chehrae akbar
phir bhai se milna bada dushwaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

akbar se kahe aaye mujhe lene ko jaldi
ay baba safar ke liye taiyaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

wo shehre madina jahan aksar hai musalmaan
tanha shahe wala ki azadaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

har waqt lagi rehti hai darwaze pe nazre
is darde musalsal may giraftaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

kya aagayi awaaz-e-azaane ali akbar
is ranjo musibat may giraftaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

shabbir ka sar kat gaya abbas ke baazu
ab zainab-o-kulsum hai darbaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

acha hi hua tum na gayi saath safar may
maa behne hai aur shaam ka bazaar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........

sughra se kahe kaun dafar margaya wo bhi
jis asghar-e-nadaan se tujhe pyar hai sughra
kehde koi....
kehte thi........
Noha - Kehti Thi Yahi Jeene

Nohaqan: Nasir Zaidi
Download Mp3
Listen Online