کہتی تھی رو کے زینب ِ مضطر میں کیا کروں
برباد دوپہر میں ہوا گھر میں کیا کروں

کھا کر سِناں کلیجے پہ اکبر گزر گیا
پیاسا ہی مر گیا میرا دلبر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔

ہائے ہائے سوالِ آب پہ ہاتھوں کے شاہ کے
کھاتے ہی تیر اُلٹ گیا اصغر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔

بکھرے پڑے تھے ٹکڑے جو قاسم کی لاش کے
مشکل سے لائے شاہ اُٹھا کر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔

میںنے تو صدقے عون و محمد بھی کر دیئے
پھر بھی بچا نہ میرا برادر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔

سوکھی رگیں گلے کی کٹے کس طرح حسین
اور شمر کا کُند ہے خنجر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔

عباس ہو کہاں علی کبر ہو تم کہاں
خیمے جلا رہے ہیں ستمگر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔

بالوں سے منہ چھُپائے ہوئے در بدر پھری
ظالم نے چھین لی میری چادر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔

ننھا گلا سکینہ کا بندھا ہے سب کے ساتھ
لگتے نہیں ہیں پائوں زمیں پر میں کیا کروں
کہتی تھی رو کے ۔۔۔۔۔


kehti thi roke zainab e muztar mai kya karoo
barbaad do pahar may hua ghar mai kya karoo

khakar sina kaleje pe akbar guzar gaya
pyasa hi margaya mera dilbar mai kya karoo
kehti thi roke....

haye haye sawaal e aab pe hathon ke shah ke
khaate hi teer ulatgaya asghar mai kya karoo
kehti thi roke....

bikhre paday thay tukde jo qasim ki laash ke
mushkil se laaye shah uthakar mai kya karoo
kehti thi roke....

maine to sadqe aun o mohamed bhi kar diye
phir bhi bacha na mera baradar mai kya karoo
kehti thi roke....

sookhi ragay galay ki katay kis tarha hussain
aur shimr ka kund hai khanjar mai kya karoo
kehti thi roke....

abbas ho kahan ali akbar ho tum kahan
qaimay jala rahe hai sitamgar mai kya karoo
kehti thi roke....

balon se moo chupaye huye dar badar phiri
zaalim ne cheenli meri chadar mai kya karoo
kehti thi roke....

nanha gala sakina ka baandha hai sab ke saath
lagtay nahi hai paaon zameen par mai kya karoo
kehti thi roke....
Noha - Kehti Thi Roke Zainab

Nohaqan: Syed Aalam Wasti
Download Mp3
Listen Online