کرب و بلا میں شام ہوئی سورج نکلا تھا یثرب میں
ڈوبتے سورج کی یہ ضیائ ہے جو دُنیا میں عام ہوئی
کرب و بلا میں شام ۔۔۔۔۔

حق کیا ہے باطل کیا ہے یہ کرب و بلا بتلائے گی
کس کا نام ہے اب تک اور کس کی ہستی گُمنام ہوئی
کرب و بلا میںشام ۔۔۔۔۔

زینب سے پوچھو کیونکر دن گُزرا تھا عاشور ِہ کا
صبح ہوئی تو کیا منظر تھا کس عالم میں شام ہوئی
کرب و بلا میں شام ۔۔۔۔۔

اکبر کا سہرا دیکھیں اصغر کی جوانی بھی دیکھیں
ہر وہ ماں ہر ایک تمنا بانو کی ناکام ہوئی
کرب وبلا میں شام ۔۔۔۔۔

سر دے کر راہِ حق میں نیزے پہ تلاوت فرمائی
بعدِ قتلِ سبطِ پیعمبر معراجِ اسلام ہوئی
کرب و بلا میں شام ۔۔۔۔۔

عابد نے راہِ کُوفہ میں وہ عظم و ہمت دکھلائی
پائوں سے زنجیر لپٹ کر درد سے ہر ہر گام ہوئی
کرب و بلا میں شام ۔۔۔۔۔


karbobala may shaam hui suraj nikla tha yasrab may
doobte suraj ki ye siya hai jo dunya may aam hui
karbobala may shaam....

haq kya hai baatil kya hai ye karbobala batlayegi
kiska naam hai ab tak aur kiski hasti gumnam hui
karbobala may shaam....

zainab se poocho kyun kar din guzra tha ashooray ka
subha hui to kya manzar tha kis aalam may shaam hui
karbobala may shaam....

akbar ka sehra dekhein asghar ki jawani bhi dekhein
har wo maa har ek tamanna bano ki nakaam hui
karbobala may shaam....

sar dekar raahe haq may naize pe tilawat farmayi
baade qatle sibte payambar meraj e islam hui
karbobala may shaam....

abid ne raahe kufa may wo azm o himmat dikhlayi
paon se zanjeer lipat kar dard se har har gaam hui
karbobala may shaam....
Noha - Karbobala May Shaam

Nohaqan: Sachey Bhai
Download Mp3
Listen Online