کربلا والوں کی زنداں سے رہائی ہو گئی
تربتِ بالی سکینہ سے جُدائی ہو گئی

اس قدر مارے تماچے ہیں شمرِ بدکار نے
حشر تک وہ موت بابا کی رُلائی سو گئی
تُربتِ بالی سکینہ سے جُدائی ہو گئی
کربلا والوں کی زنداں ۔۔۔

مومنو!منہ کو چھُپا لو نوچ ڈالو سر کے بال
سر برہنہ دشت میں زہرا کی جائی ہو گئی
تُربتِ بالی سکینہ سے جُدائی ہو گئی
کربلا والوں کی زنداں ۔۔۔

اصغرِ معصوم کا وہ مسکرانا موت پر
دیکھ کر شرمندہ دریا کی ترائی ہو گی
تُربتِ بالی سکینہ سے جُدائی ہو گئی
کربلا والوں کی زنداں ۔۔۔

سر کٹا گُلزار جب مشکل کشائ کے لال کا
تا قیامت دین کی مشکل کشائی ہو گئی
تُربتِ بالی سکینہ سے جُدائی ہو گئی
کربلا والوں کی زنداں ۔۔۔


karbala walon ki zindaan se rehaai ho gayi
turbat-e-baali sakina se judaai ho gayi

is khadar maare tamache hai shimr-e-badkaar ne
hashr tak wo mout baba ki rulaayi so gayi
turbat-e-baali sakina se judaai hogayi
karbala walon ki zindaan....

momino moo ko chupalo noch daalo sar ke baal
sar barehna dasht may zahara ki jayee ho gayi
turbat-e-baali sakina se judaai ho gayi
karbala walon ki zindaan....

asghar-e-masoom ka wo muskarana maut par
dekh kar sharminda darya ki tarayi ho gayi
turbat-e-baali sakina se judaai ho gayi
karbala walon ki zindaan....

sar kata gulzaar jab mushkil kusha ke laal ka
ta qayamat deen ki mushkil kushayi ho gayi
turbat-e-baali sakina se judaai hogayi
karbala walon ki zindaan....
Noha - Karbala Walon Ki Zindan

Nohaqan: Hasan Sadiq
Download Mp3
Listen Online