یہ ہمارے دل میں جو ایمان ہے
کربلا والے تیرا احسان ہے
رہتی دُنیا تک ہے تیرا غم حسین
رُک نہیں سکتا تیرا ماتم حسین
ہم اُٹھائیں گے تیرا پرچم حسین
تیرے پرچم کی انوکھی شان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

آندھیاں اُٹھیں گی طوفان آئیں گے
تیرے ماتم سے نہ ہم گھبرائیں گے
ہر فضائے ظلم پر چھا جائیں گے
یہ ہمارا عہد ہے پیمان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

حشر تک لہرائے گا پرچم تیرا
کم نہیں ہو گی کبھی اس کی ضیا
دے رہا ہے آج بھی در سے وفا
ہائے کیا تیرے علم کی شان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

لاکھوں اب طوفان اُٹھیں اب آندھی چلے
لاکھ ہوں دار و رسن کے مرحلے
صبر کے خالق تیرے پرچم تلے
اب ہمیں ہر مرحلہ آسان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

خود مسلمانوں نے لُوٹا گھر تیرا
سچ تو یہ ہے اے شہیدِ کربلا
ہو گئی تجھ پہ ستم کی انتہا
کیا امامِ وقت کی پہچان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

سرورِ دین کام جو تُو نے کیا
حضرتِ ایوب سے کب ہو سکا
تُو نے اکبر سا پسر بھی دے دیا
صبر تیرے صبر پر حیران ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

ریگ ذرے گرم پر کانٹا گیا
ظلم کے خنجر سے جب تیرا گلا
حق پُکار اُٹھا شہیدِ کربلا
رہتی دُنیا تک تیرا فرمان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

تیرے ہاتھوں پر جو اک معصوم تھا
پیاس کی شدت سے جو مخموم تھا
کیا لعینوں کو نہیں معلوم تھا
تیرے ہاتھوں پر بھی اک قرآن ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

بے زبان کے رن میں آنے کی ادا
دشمنوں کے دل ہلنے کی ادا
مسکرا کر تیر کھانے کی ادا
ہر ادا میں حق کی اک اعلان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔

اے ظہیر اک یہ بھی کارِ ثواب
کہہ کے میں نے یا علی یا بو تراب
کتنے چہروں سے اُلٹ دی ہے نقاب
نام حیدر قلب کی میزان ہے
کربلا والے تیرا ۔۔۔۔۔


ye hamare dil may jo imaan hai
karbala wale tera ehsaan hai
rehti duniya tak hai tera gham hussain
ruk nahi sakta tera matam hussain
hum uthayenge tera parcham hussain
tere parcham ki anokhi shaan hai
karbala wale tera....

aandhiyaa uthengi toofan aayenge
tere matam se na hum ghabrayenge
har fiza-e-zulm par cha jayenge
yeh hamara ahd hai paymaan hai
karbala wale tera....

hashr tak lehrayega parcham tera
kam nahi hogi kabhi iski ziya
de raha hai aaj bhi dar se wafa
haaye kya tere alam ki shaan hai
karbala wale tera....

laakhon ab toofan uthe ab aandhi chale
laakh ho daaro rasan ke marhale
sabr ke khaaleq tere parcham talay
ab hame har marhala aasaan hai
karbala wale tera....

khud musalmano ne loota ghar tera
sach to ye hai ay shaheede karbala
hogayi tujhpe sitam ki inteha
kya imame waqt ki pechaan hai
karbala wale tera....

sarwar-e-deen kaam jo tune kiya
hazrate ayub se kab ho saka
tune akbar sa pisar bhi de diya
sabr tere sabr par hayraan hai
karbala wale tera....

rayg zaare garm par kaanta gaya
zulm ke khanjar se jab tera gala
haq pukaar utha shaheede karbala
rehti duniya tak tera farmaan hai
karbala wale tera....

tere haaton par jo ek masoom tha
pyas ki shiddath se jo maqmoom tha
kya laeeno ko nahi maloom tha
tere haaton par bhi ek quran hai
karbala wale tera....

bezaban ke ran may aane ki ada
dushmano ke dil hilaane ki ada
muskurakar teer khaane ki ada
har ada may haq ke ek elaan hai
karbala wale tera....

ay zaheer ek ye bhi kaar-e-sawaab
kehke maine ya ali ya bu turaab
kitne chechro se ulat di hai niqaab
naam hyder khalb ki mezaaan hai
karbala wale tera....
Noha - Karbala Wale Tera
Shayar: Zaheer
Nohaqan: Mirza Sikander Ali
Download Mp3
Listen Online