جو شامل بزمِ غمِ شبیر نہیں ہے
حاصل اُسے ایمان کی جاگیر نہیں ہے

قربانیِ شبیر ہٹا دو تو یہ اسلام
وہ خواب ہے جس خواب کی تعبیر نہیں ہے
جو شامل بزمِ۔۔۔۔۔

بے حُبِ علی سجدے ہیں یوں میری نظر میں
گویا تو ہے قرآن کی تفسیر نہیں ہے
جو شامل بزمِ۔۔۔۔۔

بیمار کے پائوں کی طرف دیکھنے والو
اسلام کا لنگر ہے یہ زنجیر نہیں ہے
جو شامل بزمِ۔۔۔۔۔

اے کوفیو بے پردہ ہے یہ حُرمتِ اسلام
بے پردہ یہاں زینبِ دلگیر نہیں ہے
جو شامل بزمِ۔۔۔۔۔

بانو نے یہ عاشور کی شب خواب میں دیکھا
جھُولے میں میرا اصغرِ بے شیر نہیں ہے
جو شامل بزمِ۔۔۔۔۔

اصغر کی شہادت نے کیا ظلم کو رُسوا
اب ترکشِ اعدا میں کوئی تیر نہیں ہے
جو شامل بزمِ ۔۔۔۔۔

جس میں نہ روانی ہو نہ ہو شوکتِ الفاظ
محشر وہ تیرے ہاتھ کی تحریر نہیں ہے
جو شامل بزمِ ۔۔۔۔۔


jo shaamil e bazme ghame shabbir nahi hai
haasil usay emaan ki jageer nahi hai

qurbaniye shabbir hata do to ye islam
wo khwab hai jis khwab ki tameer nahi hai
jo shaamil e bazme....

be hubbe ali sajde hai yun meri nazar may
goya to hai quran ki tafseer nahi hai    
jo shaamil e bazme....

bemaar ke paon ki taraf dekhne walon
islam ka langar hai ye zanjeer nahi hai
jo shaamil e bazme....

ay koofiyo be-parda hai ye hurmate islam
be-parda yahan zainab e dilgeer nahi hai
jo shaamil e bazme....

bano ne ye ashoor ki shab khwab may dekha
jhoolay may mera asghare baysheer nahi hai
jo shaamil e bazme....

asghar ki shahadat ne kiya zulm ko ruswa
ab tarkashe aada may koi teer nahi hai
jo shaamil e bazme....

jisme na rawani ho na ho shaukate alfaaz
mehshar wo tere khaak ki tehreer nahi hai
jo shaamil e bazme....
Noha - Jo Shaanil e Bazme
Shayar: Mehshar Lakhnavi
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online