جو نامِ حُسین ابنِ علی لے کے گُزر جائے
طوفان کا پانی بھی اگر ہو تو ٹھہر جائے

کیا کہنا ہے دشتِ بلا تیری زمیں کا
ہے زندئہ جاوید یہاں آ کے جو مر جائے
جو نامِ حُسین ۔۔۔۔۔

شہ کہتے تھے ہم دین پہ آنچ آنے نہ دیں گے
ہ گھر جائے پسر جائے کے سر جائےگر جائے ک
جو نامِ حُسین ۔۔۔۔۔

ماں نے تیری زُلفوں کو سنوارا تو ہے اکبر
ڈر ہے کیا اسی ردائے ہستی نہ بکھر جائے
جو نامِ حُسین ۔۔۔۔۔

کم سن ہے یتیمی ہے اسیری ہے قلق ہے
ایسا نہ ہو زندان میں سکینہ کہیں مر جائے
جو نامِ حُسین ۔۔۔۔۔

صُغریٰ سے مرض میں وہ بھرے گھر کا بچھڑنا
اس طرح کبھی مارے نہ مرتاہو تو مر جائے
جو نامِ حُسین ۔۔۔۔۔

سوچو تو عروج اب وہ جیئے کس کے سہارے
پیری میں جواں لال جس انسان کا مر جائے
جو نامِ حُسین ۔۔۔۔


jo naame hussain ibe ali leke guzar jaaye
toofan ka pani bhi agar ho to tehar jaaye

kya kehna hai dashte bala teri zameen ka
hai zinda e javez yahan aake jo mar jaaye
jo naame hussain....

sheh kehte thay hum deen pe aanch aane na denge
gar jaaye ghar to ghar jaaye pisar jaaye ke sar jaaye
jo naame hussain....

maa ne teri zulfon ko sawara to hai akbar
dar hai kya isi raadae hasti na bikhar jaaye
jo naame hussain....

kamsin hai yateemi hai aseeri hai qalaq hai
aisa na ho zindan may sakina kahin mar jaaye
jo naame hussain....

sughra se marazme wo bhare ghar ka bichadna
is tarha kabhi maare na marta ho to mar jaaye
jo naame hussain....

socho to urooj ab wo jiye kiske sahaare
peedi may jawan laal jis insan ka mar jaaye
jo naame hussain....
Noha - Jo Naame Hussain
Shayar: Urooj Bijnori
Nohaqan: Tableeq e Imamia (Nazim Hussain)
Download Mp3
Listen Online